جامعہ اسلامیہ سین پور گڈا میں اختتامی انجمن انعقاد پذیر

جامعہ اسلامیہ سین پور گڈا میں طلبہ کی انجمن اصلاح البیان کا اختتامی پروگرام انتہائی تزک و احتشام کے ساتھ منعقد ہوا. طلبہ نے اس پروگرام میں پورے ذوق و شوق، دلچسپی اور پوری تیاری کے ساتھ شرکت کی. تقریری مسابقہ میں جن طلبہ نے اول دوم اور سوم پوزیشن حاصل کی ان کو انعامات سے نوازا گیا. انعام کی تقسیم دار العلوم دیوبند کے مایہء ناز استاذ حضرت مولانا منیر الدین احمد عثمانی اور مولانا محمد مسلم صاحب امام و خطیب جامع مسجد بادل بیگ دہلی کے دست مبارک سے عمل میں آئی.
ایک طالب علم نے قرآن کریم کا حفظ مکمل کرنے کی سعادت حاصل کی ہے اس لئے اختتامی انجمن کے ساتھ ختم قرآن کی بھی تقریب تھی، اس مناسبت سے مولانا محمد مسلم صاحب قاسمی نے اپنے خطاب میں قرآن کی عظمت و اہمیت پر روشنی ڈالی اور کہا کہ جس طالب علم نے قرآن پاک حفظ کیا ہے وہ قابل مبارکباد ہیں اس کے ماں باپ قابل مبارکباد ہیں اور اس کے ساتھ ہی اس کے اساتذہ بھی قابل مبارکباد ہیں.
مولانا منیر الدین احمد عثمانی نقشبندی نے فرمایا کہ حفظ قرآن کی سعادت معمولی بات نہیں بلکہ قرآن کے مطابق اللہ تعالیٰ کی طرف سے اپنے منتخب بندوں میں سے اس عظیم سعادت کے لئے انتخاب کا معاملہ ہے. بلاشبہ اللہ تعالٰی حفاظ کو دیگر بندوں سے منتخب کرکے ان کو عظیم تحفہ عنایت فرماتے ہیں. مولانا عثمانی نے کہا کہ جن طلبہ کو انعامات سے نوازا گیا وہ انعامات کو معمولی نہ سمجھیں. انعام قیمت کے اعتبار سے کم تر ہوسکتا ہے مگر عظمت کے اعتبار سے انعام انتہائی قابل قدر ہوا کرتا ہے. اکابرین اس کو اس سرمایہء حیات سمجھتے تھے اور زندگی بھر اس کی حفاظت کیا کرتے تھے مولانا عثمانی کی دعا سے مجلس کا اختتام ہوا مفتی نور الدین صاحب قاسمی ناظم تعلیمات مدرسہ ہذا نے مہمانوں کا شکریہ ادا کیا. اس پروگرام میں مدرسہ کے اساتذہ کے علاوہ قرب و جوار کے معزز حضرات بھی شریک تھے جن میں مفتی عباد الرحمن صاحب مولانا زین العابدین صاحب مولانا غفران صاحب قاری شاہ عالم صاحب حافظ قاری طاہر صاحب مولانا محمد مسلم صاحب ،قاری عمار صاحب قاری عبد الاحد صاحب اور مدرسہ حسینہ تجوید القرآن دگھی کے استاد و صدر جمعیۃ علماء بلاک بسنت رائے گڈا مفتی محمد سفیان صاحب قاسمی وغیرہ وغیرہ بطور خاص قابل ذکر ہیں

 Website with 5 GB Storage

اپنا تبصرہ بھیجیں