حرم کے پاسباں جب ہو گئے مغرب کے شیدائی

: محمد طارق قاسمی لکھیم پوری 

نہ ہو  کیونکر زمانے میں مسلمانوں  کی رسوائی

حرم والوں نےکی جاکر  کلیسا میں  جبیں سائی
خدا  جانے  کہ  یہ شہزادہ  کیا  کیا  گل کھلائے  گا

نصیحت نیک بندوں کی جسے بالکل نہ راس آئی 
نظر  آنے  لگی  اُن  کو  کجی  دینِ محمد میں

حرم کے پاسباں  جب  ہو گئے  مغرب کے شیدائی

شریعت کی حفاظت کے لئے ارضِ مقدس میں

نہ جانے  کتنے  اہلِ علم و تقوی  نے  سزا  پائی
 “علی” ہوں یا کہ ہوں “سلمان عودہ” یا “عَوَض قرنی”

خطا سب کی ہے حق گوئی ، سبھی کا جرم سچائی
الہی رحم  فرما ! اب  وہی  بیمارِ  مغرب ہیں

 جنھیں کرنی تھی  امت کی زمانے میں مسیحائی
نہ ہو نومید  اےطارقؔ تو اپنی حق بیانی سے 

یقینًا  رنگ   لائے  گی   تری  یہ  خامہ  فرسائی

 Website with 5 GB Storage

اپنا تبصرہ بھیجیں