جمعیت علمائے دہلی نے چھیڑی جمعیت ممبرسازی کی مہم

Views: 138
Avantgardia

نئی دہلی

مدرسہ باب العلوم جعفرآباد میں جمعیت علمائے ریاست دہلی کے ذمہ داران کی منعقد ایک میٹنگ میں قوم و ملت کے حوالے سے مختلف ایجنڈوں پر بحث و گفتگو کے بعد یہ طے پایا کہ مسلمانوں کو این آر سی سے بالکل گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے، کیوں کہ مسلمان بھارت کے مول نواسی ہیں، جنھیں ملک سے کوئی نہیں نکال سکتا۔ حکومتی اہل کاروں کے دیے گئے کچھ بیانات پر سوال و جواب میں یہ کہا گیا کہ یہ حکومت کی بد نیتی ہوسکتی ہے، لیکن چوں کہ ہم اس کے لیے مکمل تیار ہیں، تو حکومت کی کوئی سازش کارگر نہیں ہوگی ، ان شاء اللہ ، اور آسام کی مثال آپ سب کے سامنے ہے۔ مقررین نے این پی آر اور ووٹر کارڈ کے تعلق سے معلومات  فراہم کرتے ہوئے بتایا کہ اپنے کاغذات درست رکھیں اور اس سلسلے میں کوئی بھی پریشانی ہو، تو حکومت کی طرف سے جاری دیگر ذرائع سے فائدہ اٹھانے کی کوشش کریں اور مسئلہ کو حل کرائیں، اس کے باوجود کوئی پریشانی ہو، تو آپ جمعیت علما سے رابطہ کرسکتے ہیں۔

میٹنگ میں جمعیت علمائے ہند کی ممبرسازی پر بھی زور دیا گیا اور یہ کہا گیا کہ یکم ستمبر سے ممبر سازی کا عمل جاری ہے، جو 31 دسمبر 2019 تک جاری رہے گا، اس میں ہر مسلم بھارتی باشندوں کو ممبر بننے اور بنانے کی کوشش کرنی چاہیے۔ اور محنتی و فعال شخصیات کو نمائندہ منتخب کرکے اپنا لیڈر چنا چاہیے، تاکہ ہر موقع پر آپ کے ساتھ کھڑا ہوسکے۔

اس میٹنگ میں مولانا اخلاق حسین قاسمی، قاری محمد میاں دہلوی اور مفتی ظفر الدین صاحب مفتاحی سابق صدر جمعیت علمائے دہلی کی حیات و خدمات پر سیمینار کرنے کا بھی فیصلہ کیا، جو آواخر فروری میں ہوسکتا ہے۔

خصوصی شرکا میں مولانا محمد داود صاحب امینی صاحب مہتمم مدرسہ باب العلوم جعفرآباد و نائب صدر جمعیت علمائے دہلی، مولانا جاوید صدیقی قاسمی ناظم اعلیٰ جمعیت علمائے دہلی، قاری عبد السمیع صاحب قاسمی نائب صدر جمعیت علمائے دہلی،قاری محمد احرار قاسمی، مولانا ضیاء اللہ قاسمی ، منیجر الجمعیت بکڈپو دہلی، مولانا محمد یاسین قاسمی جہازی، جمعیت علمائے ہند، قاری محمد عارف صاحب آل انڈیا امام فاونڈیشن، مولانا غیاث الدین ترکمان گیٹ، مفتی اسحاق حقی نبی کریم، مفتی عبد الواحد قاسمی امام و خطیب ایک مینارہ مسجد لچھمی نگراور مولانا اسلام الدین کے علاوہ کئی اہم اور معزز شخصیات شریک مجلس تھیں۔  

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *

0

Your Cart