مجھےبھی اپنی امی جیسی بیوی چاہیے


۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کچھ دن پہلے میری ایک صاحب سے ملاقات ہوئ
،جن کا کہنا تھا کہ لڑکیاں اکثر کہتی ہیں کہ انہیں ان کے باپ جیسا شوہر ملے اور اُن جناب کی بات میں کچھ غلط بھی نہیں تھا۔
لڑکیوں کو ان کے باپ شہزادیوں کی طرح رکھتے ہیں، عزت اور پیار دیتے ہیں، شاید اس لیے وہ یہ دعا کرتی ہیں۔
ان جناب کا کہنا یہ تھا کہ انہیں بھی اپنی امی جیسی بیوی چاہیے؛ لیکن یہ بات کرتے ہوئے جِھجھک جاتے ہیں۔
وہ جھجھکتے ہیں کہ لوگ اس بات کو کس انداز میں لیں گے اور مجھے ان کی بات بالکل غلط نہیں لگی۔
اگر لڑکی اپنے باپ جیسا شوہر مانگ سکتی ہے تو لڑکا اپنی ماں جیسی بیوی کیوں نہیں مانگ سکتا!!؟
ماں بھی اپنے بیٹے کو شہزادوں کی طرح رکھتی ہے۔
اس کا احساس کرتی ہے۔
اس کے گھر آنے پر اسے تازہ روٹی دیتی ہے۔ اس کی پریشانی سنتی ہے۔ اسے سمجھتی ہے۔
یہ اس کے پیار کا اس کی پرواہ کا ایک اندازہ ہے؛ لیکن لڑکا یہ بولے تو لوگ اسے غلط طریقے سے لیتے ہیں یا اس کا مذاق اڑاتے ہیں۔
مجھے افسوس ہوتا ہے یہ دیکھ کر، معاشرے میں لڑکیوں کے لیے تو بہت کچھ کیا جاتا ہے، کہا جاتا ہے اور لکھا جاتا ہے؛ لیکن لڑکوں کو یہ کہ دیا جاتا پے:” تم مرد ہو! مرد ہی رہو! زیادہ نازک مت بنو!”
کوئ مجھے بتائے گا کہ عورت کو مٹی سے بنایا گیا ہے تو مرد کو کیا کسی قسم کے لوہے سے بنایا گیا ہے جو پیدائشی “مضبوط” ہے۔
معاشرے کا تنگ نظریہ صرف عورت تک نہیں رہتا، اس کا بڑا سامنا مرد بھی کرتا ہے۔
عورت بہت آسانی سے کہ سکتی ہے:
” ہائے! کاش میں لڑکا ہوتی!!”
؛لیکن مرد اگر یہ کہے کہ:
“ہائے! کاش میں لڑکی ہوتا!!”
تو اس کا مذاق اڑایا جاتا ہے۔
لڑکی اگر گھر سے باہر نکل کر کام کرے اپنے قدموں پر کھڑی ہو تو وہ مضبوط اور اندیپیندنٹ (independent) ہے اور اگر لڑکا مضبوط اور انڈیپینڈنٹ (independent) بن کر اپنے تمام کام بالخصوص گھرکےکام کرے تو کہ دیا جاتا ہے کہ”اتنا ہی لڑکی بننے کا شوق ہے تو گھر میں بیٹھ جاؤ!”۔ لڑکی چھوٹی سی بات کو دل پہ لے کر روپڑے تو نازک، لڑکا روئے تو “حسینہ”۔ ایسا کیوں!!؟؟؟؟
مجھے سمجھ میں نہیں آتا کہ دنیا کے تمام اصول لڑکوں پر ہی کیوں لاگو ہوتے ہیں؟؟؟
لڑکے اپنی ماں جیسی بیوی ملنے کی دعا نہیں کر سکتے، لڑکے رو نہیں سکتے، لڑکے انڈیپنڈنٹ کیوں نہیں ہوسکتے؟ صرف اس لیے کہ وہ “مرد” ہیں۔۔۔۔

📒 میریڈائریسے 📒

انتخاب: احمد_شُجاعؔ

واٹسپ نمبر: 9897860846

 Website with 5 GB Storage

اپنا تبصرہ بھیجیں