ان کو کشمیریوں سے ہمدردی نہیں بلکہ علماء کرام سے عداوت ہے

Views: 372
Avantgardia

مولانا محمد سفیان القاسمی مولانا محمد سفیان القاسمی ،گڈا جھارکھنڈ

کیا ان لکھنے والوں کو کشمیریوں سے ہمدردی ہے؟ کیا ان کے دلوں میں کشمیریوں سے محبت ہے؟ اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ یہ لکھنے والے لوگ کشمیریوں سے ہمدردی و محبت میں لکھتے ہیں تو آپ غلط فہمی میں ہیں حقیقت میں ان کو کشمیریوں سے نہ کوئی ہمدردی ہے اور نہ محبت بلکہ ان کو علماء کرام سے نفرت ہے اور ان کو علماء کرام کی تنظیم سے عداوت ہے اور یہی نفرت و عداوت ان کو مضمون لکھنے پر مجبور کرتی ہے اور ہم لوگ ان کا مقصد سمجھے بغیر ان کے میسج کو شیر کرتے رہتے ہیں

کیونکہ کشمیریوں پر ہونے والے ظلم و ستم کے خلاف آواز اٹھانے کی ذمہ داری تنہا کسی ایک تنظیم کی نہیں بلکہ ہندوستان میں مسلمانوں کے ہر مسلک کی جتنی بھی چھوٹی بڑی تنظیمیں ہیں، یہ ہر ایک کی ذمہ داری ہے. چنانچہ ہونا یہ چاہیے تھا کہ وہ تنظیمیں ہندوستان کے آئین کے مطابق حکمت عملی مرتب کرتیں، تجاویز اور قراردادیں پاس کرتیں، احتجاج و مظاہرے کرتیں اور دھرنا دیتیں اگر ان تنظیموں نے ایسا نہیں کیا اور لکھنے والوں کے دلوں میں کشمیریوں سے سچی ہمدردی تھی تو ان کو چاہیے تھا کہ اپنی ذمہ داری پوری نہ کرنے والی ساری تنظیموں پر تنقید کرتے. ان کے خلاف لکھتے اور ان کو ابھارنے کی ہر ممکن کوشش کرتے. مگر یہ لوگ ان ساری تنظیموں کو چھوڑ کر صرف ایک تنظیم کے پیچھے پڑ گئے ہیں اور رات دن ان کے خلاف لکھتے رہتے ہیں. اس کی وجہ صرف یہ ہے کہ یہ علماء کی تنظیم ہے اس تنظیم کے نام میں علماء شامل ہونے کی وجہ سے ان کو چڑ ہے.

ان لکھنے والوں سے سوال یہ ہے کہ اگر آپ کے دلوں میں کشمیریوں سے اتنی ہی ہمدردی ہے اور آپ کے خیال کے مطابق جمعیۃ علماء ہند نے کشمیریوں کے ظلم پر آواز اٹھانے کے بجائے حکومت کا ساتھ دیا حالانکہ یہ الزام سراسر غلط ہے. جمعیۃ علماء کی مجلس عاملہ نے اپنی تجویز میں کشمیر میں حقوق انسانی کی پامالی کو روکنے کے لئے حکومت پر بھی زور دیا ہے. پھر بھی اگر آپ کو لگتا ہے کہ جمعیۃ نے ظلم کے خلاف آواز نہیں اٹھائی تو آپ نے اپنی ذمہ داری پوری نہ کرنے والی دوسری تنظیموں کے خلاف کیوں نہیں لکھا؟ ظلم پر خاموش رہنے والی دوسری تنظیموں پر تنقید کیوں نہیں کی؟ کیا ظلم پر خاموش رہنا ظلم کی تائید نہیں ہے؟ آپ نے خود احتجاج اور مظاہروں میں شرکت کیوں نہیں کی؟ کیا آپ کا کام صرف تنقید کرنا ہے؟ آپ نے کشمیریوں پر ہونے والے ظلم و ستم کے خلاف آواز اٹھانے کے لئے دوسری تنظیموں سے گزارش کیوں نہیں کی؟ . ان تنظیموں کو جھنجھوڑنے والے مضامین کیوں نہیں لکھے؟ اس سے کشمیریوں کو بھی لگتا کہ ہمارے لئے آواز اٹھانے والے لوگ بڑی تعداد میں ہیں اور بے شمار تنظیمیں ہیں. اگر ایک جمعیۃ نہیں تو کیا ہوا سارے مسلمان اور مسلمانوں کی ساری تنظیمیں ہمارے دکھ درد میں شریک ہیں. مگر ان ساری تنظیموں کو چھوڑ کر صرف ایک تنظیم کے خلاف آپ زہر کیوں اگلتے ہیں؟ اس کی باتوں کو توڑ موڑ کر کیوں پیش کرتے ہیں؟ اس سے صاف معلوم ہوتا ہے کہ آپ کو کشمیریوں سے ہمدردی نہیں بلکہ آپ کے دل میں ایک خاص تنظیم، اس میں شامل علماء کرام اور اس کے سربراہ کے تئیں شدید نفرت عداوت ہے

Comments: 4

Your email address will not be published. Required fields are marked with *

  1. Hazrat, koi jamiat ulma e hind ki mukhlafat nahi karta, aap ke chaplus, khud garz neta mahmood madni ki bakvas ki log mukhalaft karte he

  2. تحيرت من مقالك هذا ! الماذا الناس يتكلمون عن مسؤولية جميعة العلماء تجاه مسلمي الكشمير ؟ لأنهم يرون أن القوة بيد جمعية العلماء وهم قادة المسلمين في الهند وهم الذين يدعون لانفسهم احقاق الحق فاذا بدؤا ابطال الحق ويساهمون مع قاتل المسلمين المشهور في االعالم فلماذا لاينتقدون ؟ جمعية العلما خانت مع قضية المسلمين بل خانت مع مشايخ الجمعية الذين كانوا ضد الباطل دائما بدؤا

0

Your Cart