نئے اسلامی سال کو اپنی زندگی میں انقلاب کا ذریعہ بنائیں

Views: 47
Spread the love
Avantgardia

مفتی محمد سفیان القاسمی

مدرسہ حسینیہ تجوید القرآن دگھی گڈا جھارکھنڈ

کوئی بھی انسان دنیا کے کسی بھی میدان میں کامیابی حاصل کرنا چاہتا ہے اور زندگی کے کسی بھی شعبہ میں وہ ترقی کا طالب ہے تو اس کے لئے دو چیزیں بنیاد کی حیثیت رکھتی ہیں. ایک تو یہ کہ وہ گزرے ہوءے دنو میں اپنے کئے ہوءے کاموں کا جائزہ لے کہ اس نے اب تک کیا کیا، کس چیز میں اسے کامیابی ملی اور کس چیز میں اسے ناکامی ہاتھ آئی. ماضی کی یہ باتیں لایعنی نہیں بلکہ قیمتی تجربات ہیں جن کی آئندہ کی زندگی میں بے حد ضرورت ہوتی ہے. دوسری چیز یہ ہے کہ وہ آنے والے دنوں کے لئے خاکے بناءے اور منصوبہ بندی کرے. یہ دونوں چیزیں کسی بھی کامیابی کے لئے اتنا ہی لازمی ہیں جتنا کسی اونچی بلڈنگ کو بنانے کے لیے اس کا نقشہ اور اس کی بنیاد. جس طرح بغیر نقشہ اور بغیر بنیاد کے اونچی بلڈنگ کا تصور محال ہے اسی طرح کسی بھی بڑی کامیابی کا تصور ماضی کے کاموں کے جائزہ اور مستقبل کے لئے بہترین پلاننگ کے بغیر محال ہے

چنانچہ نیا سال خواہ محرم کی شکل میں ہو یا جنوری کی شکل میں، یہ انسان کو یہی دونوں باتیں بتانے کے لئے آتا ہے کہ وہ گزرے ہوءے سال کا جائزہ لے اور آنے والے سال کے لئے وہ منصوبہ بندی کرے. اس کا ایک طریقہ تو یہ ہے کہ آپ یوں ہی ذہن میں سرسری طور پر کچھ سوچ لیں اور مطمئن ہو جائیں کہ ہم نے جائزہ بھی لے لیا ہے اور پلاننگ بھی کرلی ہے. مگر یہ طریقہ زیادہ مفید اور کارگر نہیں ہے. ماہرین کے مطابق مفید، مؤثر اور بہتر طریقہ یہ ہے کہ جائزہ اور منصوبہ بندی کا کام تحریری شکل میں ہونا چاہئے کیونکہ تحریری شکل میں یہ کام جتنے اچھے طریقے سے ہو سکتا ہے، محض خیالات کے سہارے نہیں ہو سکتا. چنانچہ آپ سکون و اطمینان کا وقت نکال کے ایک کاپی و قلم لے کر بیٹھ جائیں اور گہرائی کے ساتھ پہلے گزرے ہوءے سال کا جائزہ لیں کہ اس میں آپ نے کیا کیا. اگر آپ نے سال گزشتہ کے لئے کچھ سوچا ہی نہیں تھا تو یہ بڑے افسوس کی بات ہے اور اگر سوچا تھا اور منصوبہ بندی کی تھی تو دیکھیں کہ آپ کو اس میں کتنی کامیابی ملی، کس چیز میں ناکامی کا سامنا کرنا پڑا اور اس کی وجہ کیا ہوئی، وقت کتنا کار آمد ہوا اور کتنا ضائع ہوا اور کس چیز میں. ان سب چیزوں کو نوٹ کرتے جائیں. یہ گزری ہوئی باتیں بیکار نہیں بلکہ آپ کے تجربات ہیں اور زندگی میں تجربات کی بڑی اہمیت ہوتی ہے. ماضی کے تجربات کے سہارے ہی انسان مستقبل کی بلندیوں کو طے کرتا ہے. اس لئے ان باتوں کو فضول سمجھ کر نظر انداز نہ کریں. جب آپ ماضی کے جائزہ سے فارغ ہو جائیں اب مستقبل کے لئے پلاننگ شروع کریں، آنے والے سال کے منصوبے بندی کریں. کون کون سا کام کرنا ہے، کیسے کرنا ہے، اس کے لئے لائحۂ عمل طے کریں اور درمیان سال میں اپنے کاموں کا جائزہ لینے کے لئے ماہانہ اور ہفتہ واری اہداف متعین کریں. کم از کم ماہانہ جائزہ ضرور طے کریں اور ہر مہینے کے آخر میں اپنے کاموں کا جائزہ لازمی طور پر لیں کہ کام کس رفتار سے چل رہا ہے.رفتار اگر سست ہے تو تیزی لانے کی کوشش کریں. یہ ضروری نہیں کہ آپ جائزہ اور منصوبہ بندی کا کام محرم سے یا جنوری سے ہی کریں، آپ اپنی سہولت کے اعتبار سے تعلیمی سال کی ابتداء شوال سے یا اپریل سے بھی کر سکتے ہیں یا جب بھی آپ غفلت سے بیدار ہو جائیں تب کر سکتے ہیں. تاہم اگر اسلامی سال نو کے آغاز پر ہی کرلیں اگر آپ نے اب تک نہیں کیا تو اس میں کوئی حرج بھی نہیں. بلکہ ہو سکتا ہے کہ جب حدیث میں ماہ محرم کو شہر اللہ یعنی اللہ کا مہینہ کہا ہے تو اس ماہ مبارک سے اس کا آغاز کرنے پر اس کی برکت سے پورا سال آپ کے لئے بابرکت ہو جاءے.

بہر حال انسان کے لئے ہر نیاسال اپنے ساتھ یہ خاموش پیغام لے کر آتا ہے. خوش قسمت انسان وہ ہے جو نئے سال کے اس پیغام کو سن لے اور اس کی باتوں پر عمل کرکے اپنی زندگی کو کامیاب بنالے. اور بلاشبہ کسی بھی انسان کے لئے یہ محرومی کی بات ہے کہ اس کے لئے نئے سال کا آنا تفریح کا ذریعہ تو بنے مگر زندگی میں انقلاب کا ذریعہ نہ بن سکے.

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *

0

Your Cart