رمضان المبارک میں فلسطین میں قتل و غارت پر فوری روک لگائی جائےمجلس تحفظ شریعت اسلامی ہند کے وفد نے ہندستان میں اقوام متحدہ کے مندوب سے ملاقات کرکے میمورنڈم سونپا

نئی دہلی۔27/مئی (پریس ریلیز) فلسطین اور قبلہ اول القد س میں عین رمضان کے ایام میں جاری خون خرابہ پر پوری دنیا میں بے چینی اور اضطراب کا ماحول ہے، اس لیے اس بات کی سخت ضرورت ہے کہ دنیا کے بااثر ممالک اور افرادااس پر قد غن لگوائیں۔ اسی احساس کے تحت ہندستانی مسلمانوں کی نمایندگی کرتے ہوئے مجلس تحفظ شریعت اسلامی ہند کا ایک وفد اس کے صدر مولانا جاوید صدیقی قاسمی کی قیادت میں دہلی میں واقع اقوام متحدہ کا دفتر پہنچا اور وہاں سکریٹری جنرل اینٹنو گوٹیرس کے نمایندے راجیو چندرن نیشنل انفارمیشن افسر فار انڈیا و بھوٹان سے ملاقات کرکے فلسطینیوں کی بازآبادکاری سے متعلق ایک میمورنڈم سونپا۔میمورنڈم میں یہ کہا گیا ہے کہ اقوام متحدہ فلسطین اور القدس قضیہ میں تاریخی کردار رکھتا ہے، اس لیے ہم ہندستانی صر ف آپ سے یہ کہنے آئے ہیں کہ ہمارا ملک مہاتماگاندھی کے’نظریہ عدم تشدد‘ کا علم بردار ہے اور و ہ اپنی اسی سوچ کے تحت ہمیشہ فلسطینی کاز کا حامی رہا ہے، وہ فلسطین کے مظلوم انسانوں کے ساتھ ہمیشہ کھڑا رہا ہے، جب کہ دنیا کی استعماری طاقتیں اسرائیل کے ساتھ کھڑی ہیں۔ ہم یہ چاہتے ہیں کہ فلسطین کے مسئلے کو حل کیا جائے اورغزہ میں جاری سالوں سے جاری ناکہ بندی ختم کی جائے، نیز معصوم انسانوں کے قتل عام کو ہر ممکن طریقے سے روکا جائے۔ وفد نے یہ بھی کہاکہ امریکہ سیاسی طور سے مشرق وسطی میں عدم استحکا م پیدا کررہا ہے، اس لیے اس کو ثالثیت کے کردار سے دور رکھا جائے، نیز اس کو یروشلم میں سفارت خانہ قائم کرنے سے روکا جائے۔قائد وفد مولانا جاوید صدیقی نے بتایا کہ یو ا ین نمایندہ نے ہمارے موقف کی تا ئید کی اور کہا کہ وہ اس میمورنڈم کو جلد از جلد یو این جنرل سکریٹری تک ارسال کریں گے۔انھوں نے رمضان کے مہینے میں ہمارے وفد کی کد وکاوش کو لائق ستائش بتایا اور کہا ہے کہ آپ حضرات کے ذریعہ انسانیت کے تئیں یہ جذبہ قابل قدر ہے، ہم پوری کوشش کریں گے کہ آپ حضرات کا مدعا یواین صدر دفتر پہنچایا جائے۔ مولانا جاوید صدیقی نے بتایا کہ آج کے وفد میں ڈاکٹر آصف اقبال صدر اسلامک ریسرچ اینڈ ویلفئیر فاؤنڈ یشن، مفتی عبدالواحد قاسمی صدر ولی اللہی دارالافتا آن لائن فتوی دہلی، مولانا ولی اللہ قاسمی نگراں مکاتب دینیات دہلی شریک تھے۔

 Website with 5 GB Storage

اپنا تبصرہ بھیجیں