مضامین

استاذمحترم حضرت قاضی مولاناسعیداحمدصاحبؒ کرہریا

مولانا ثمیر الدین قاسمی انگلینڈ

ولادت 1936ء تقریباً……فاضل دیوبند1956ء

میرے علاقائی اساتذہ میں سے چاراستاذقابل ذکرہیں (۱)حضرت مولوی عبدالرؤف صاحب گونی مرغیاچگ،(۲)حضرت مولاناابوالحسن صاحب سرمت پوری مقیم حال شہربھاگلپورشیخ الحدیث دارالعلوم مائلی والابھروچ گجرات (۳)حضرت مولاناسہراب صاحب بھوراخاب،(۴)اورحضرت مولاناسعیداحمدصاحب کرہریا،ہرایک کی تربیت نے محتلف زاوئے سے میری تراش خراش کی اورہرایک اہمیت کے حامل ہیں لیکن ان سب میں مولاناسعیداحمدصاحب کی ذرہ نوازی لائق شکرگزاری ہے کیونکہ میں اپنے گاؤں میں بے دست وپاتھا،بیرونی دنیاسے بالکل بے خبرتھااورعمرکی اس منزل میں تپاکہ کسی کی انگلی پکڑے بغیرضائع ہونے کازبردست خطرہ تھا،حضرت مولانانے اس دیہات سے اٹھاکرمدرسہ امدادالعلوم اٹکی میں امدادی داخلہ سے نوازا،عاجزکی انگلی پکڑکرمیدان علم کاسفرطے کروایا،اگروہ یہ عنایت نہ کرتے توممکن تھاکہ دیکربچوں کی طرح میں بھی ضائع ہوجاتا،اسلئے مولاناکے لئے ؎
ہرمومیرے بدن میں زبان سپاس ہے
حضرت مولاناوہاں صدرمدرس کے عہدہ پرفائزتھے اوراپنی انتظامی صلاحیت کی وجہ سے مقبول اورہردلعزیل ہوگئے تھے،مولاناکے سوزودرد۔محنت ولگن کی وجہ سے مدرسہ عربی سوم تک ترقی کرگیاتھااوردوردرازکے طلبہ اس سے مستفیدہورہے تھے،تقریباًدس سال تک آپ اس مدرسے کے شہ نشین رہے۔
اسکے بعدمولاناامارت شرعیہ بہارپھلواری شریف پٹنہ سے منسلک ہوگئے آپ ابتدائی کچھ سالوں تک امارت شرعیہ کی شاخ واقع رانچی میں خدمت انجام دیتے رہے،بعدمیں مرکزی امارت شرعیہ پھلواری شریف تشریف لے آئے اورآج تک وہیں ہیں،اس وقت آپ نائب قاضی کی مسندپرجلوہ افروزہیں۔
1989ء میں بھاگلپورمیں زبردست فسادہواہندوؤں کے جس گاؤں میں مسلمانوں کی آبادی بہت کم تھی اورقتل وغارت کاخطرہ لاحق تھاوہ لوگ بھاگ کرمسلمانوں کی کثیرآبادی گاؤں میں منتقل ہوگئے،امارت شرعیہ نے مہاجرین کومکان تعمیرکرکے دینے اورسامان خوردونوش تقسیم کرنے کافیصلہ کیااورمولاناسعیداحمدصاحب کواسکانگران متعین فرمایا،مولانانے اپنی خدادادصلاحیت کی بناء پرہزاروں مہاجرین میں غلہ اورکپڑاتقسیم کیااورشری چک،کاٹھ بنگاؤں اوربھاگلپورشہرکے گردونواح میں مکان تعمیرکرواکردیا،اس موقع پرمولاناکی انتظامی صلاحیت کھل کرسامنے آئی اورلوگ انکے فکروتدبرسے عش عش کرنے لگے ؎
نکلے وہ نغمے جن سے روح کو وجد آگیا

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: