اہم خبریں

اشرف استھانوی وطن کی آبرو تھے۔۔ مولانا محمد حشمت علی۔۔

اشرف استھانوی وطن کی آبرو تھے۔۔ مولانا محمد حشمت علی۔۔
مشہور صحافی جناب اشرف استھانوی کی نماز جنازہ پٹنہ میں ادا ہوئی جہاں بڑی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی، پھر ان کے بھائی جناب جاوید اشرف سابق انچارج خدا بخش لائبریری اور دیگر اقرباء جنازہ لے کر ان کے وطن استھاواں پہنچے جہاں ظہر کی نماز کے بعد مدرسہ محمدیہ میں ان کے ہم درس مولانا محمد حشمت علی پرنسپل مدرسہ محمدیہ استھاواں نے ان کی نماز جنازہ پڑھائی، حاضرین کی بڑی تعداد شریک تھی، پھر ان کے آبائی قبرستان ڈھبری قبرستان دیسنہ روڈ استھاواں میں ان کو سپرد خاک کیا گیا جہاں ان کے اعزہ بالخصوص ان کے بزرگ خالو مولانا سید رضا کریم صاحب اور ان کے والد مولانا حافظ حفیظ الکریم صاحب مدفون ہیں۔ ان کی وفات پر مولانا محمد حشمت علی پرنسپل مدرسہ محمدیہ استھاواں نے اپنے تعزیتی بیان میں کہا کہ موصوف کی وجہ سے اس وقت وطن کو شہرت ملی، وہ میرے ہم درس تھے، قرآن پاک میرے ساتھ ہی مدرسہ محمدیہ میں حفظ کیا تھا، ان کے اندر شرافت و انسانیت تھی، اور کم عمری سے ہی وہ اخلاقی اقدار کے حامل تھے۔ اللہ تعالی ان کی مغفرت فرمائے۔
ان کے والد معین الدین صاحب کا بچپن میں انتقال ہوگیا تھا، ان کے خالو نے ان کی پرورش کی، انہوں نے ابتدائی تعلیم مدرسہ محمدیہ میں حاصل کی، اور پھر مگدھ یونیورسٹی میں ایم اے کیا تھا، اور جوانی سے ہی صحافت سے وابستہ ہوگئے تھے۔ موصوف تین بھائی اور ایک بہن ہیں، پڑے بھائی جناب مولانا وسیم احمد صاحب سابق مدرس مدرسہ محمدیہ ہیں، دوسرے بھائی جناب جاوید اشرف ہیں، جو ایک مدت تک خدا بخش لائبریری میں رہ کر سبکدوش ہوچکے ہیں اور اچھے شاعر ہیں۔ ان کا خاندان استھاواں کا معزز خاندان ہے، ان کا تعلق خانوادہ سادات سے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: