اسلامیات

اللہ کا تقرب حاصل کرنے کے لئے زَرّیں موقع ہے رمضان المبارک

افادات : عارف باللہ حضرت مولانا محمد عرفان صاحب مظاہری دامت برکاتہم گڈا جھارکھنڈ
سلسلہ نمبر (23)

اللہ پاک انسان کے اتنے زیادہ قریب ہیں کہ اس کے ہر ہر عمل اور تمام حرکات و سکنات کو دیکھتے ہیں خواہ وہ دن کے اجالے میں کریں یا رات کے اندھیرے میں *و اللہ بصیر بما تعملون (سورہ الحجرات)*، یہاں تک کہ انسان کے دل میں کوئی خیال بھی پیدا ہو تو اللہ پاک اس کو بھی جانتے ہیں اور کیوں نہ جانیں، اللہ تو انسان کی شہ رگ سے بھی زیادہ قریب ہیں. *و نعلم ما توسوس بہ نفسہ و نحن اقرب الیہ من حبل الورید. (سورۃ القاف)*

انسان سے اللہ کے اتنے قریب ہونے کے باوجود ہر انسان کو اللہ کی قربت حاصل نہیں، چند ہی گنے چنے بندے ہوتے ہیں جن کو اللہ کا قرب حاصل ہوتا ہے، حالانکہ اللہ کا قرب حاصل کرنا کوئی مشکل نہیں، انتہائی آسان ہے، اللہ تعالیٰ خود فرماتے ہیں کہ اگر کوئی مجھ سے ایک بالشت قریب ہوتا ہے تو میں اس سے ایک ہاتھ قریب ہوتا ہوں، جب ایک ہاتھ قریب ہوتا ہے تو میں دو ہاتھ قریب ہوتا ہوں اور جب میری طرف وہ پیدل چل کر آتا ہے تو میں اس کی طرف دوڑ کر آتا ہوں. *عن أنس رضي الله عنه عن النبي صلى الله عليه وسلم فيما يرويه عن ربه عز وجل قال‏:‏ ‏ "‏ إذا تقرب العبد إلي شبراً تقربت إليه ذراعاً، وإذا تقرب إلي ذراعاً تقربت منه باعاً، وإذا أتاني يمشي أتيته هرولة‏”‏ ‏(‏رواه البخاري‏)‏‏*

اللہ کی قربت حاصل کرنے کے لئے یہ عمومی اعلان ہے، کوئی بھی کتنا ہی ادنی اور گنہ گار انسان ہو وہ جس وقت بھی اللہ کی طرف رجوع ہونا چاہے اور اللہ سے دوستی کرنا چاہے اللہ تعالیٰ ہر وقت حاضر ہیں وہ اللہ سے دوستی کر کے مقربین بارگاہ الہی میں شامل ہو سکتا ہے. تاہم رمضان المبارک کا مہینہ اللہ پاک کا تقرب حاصل کرنے کے اعتبار سے زریں موقع کی حیثیت رکھتا ہے، کیوں کہ اس مہینے میں اللہ کی رحمت خصوصی طور سے بندوں کی طرف متوجہ ہوتی ہے، گویا رحمت خداوندی اس کا انتظار کرتی ہے کہ کوئی بندہ اس کی آغوش میں آجاءے، قدم قدم پر مغفرت اور گناہوں سے معافی کا وعدہ ہے، اس مہینہ میں دوزخ کے دروازوں کو بند کرنے اور جنت کے دروازوں کو کھولنے کا منشاء یہی ہے کہ اللہ کے بندے اللہ کی رضا حاصل کریں اور جنت کے مستحق بن جائیں. شیاطین کو قید کرنے اور ہر چیز کا ثواب بڑھا دینے کا مقصد بس یہی ہے کہ کوئی بندہ اللہ کی عظیم نعمتوں سے محروم نہ رہے.

اللہ کا تقرب حاصل کرنے کا ذریعہ اللہ تعالیٰ کی عبادت ہے اور رمضان المبارک میں کئی اہم عبادتیں ہیں جو رمضان کے علاوہ میں نہیں، اس لحاظ سے رمضان اللہ کا تقرب حاصل کرنے کے لئے بہترین موقع ہے، یہی وجہ ہے کہ بہت سے بزرگان دین یہ تمنا کرتے تھے کہ کاش ان کی موت اس وقت ہو جب وہ رمضان کے با برکت مہینہ میں روزہ سے ہوں ، وضو کرکے نماز میں مشغول ہوں اور حالت سجدہ میں ان کی روح قفص عنصری سے پرواز کر جاءے .

یہاں پر یاد رہے کہ جو لوگ عبادت ثواب پانے کی غرض سے کریں وہ بھی مقبول ہے اور جو اللہ کے خوف سے، قبر، حشر، جہنم کے ڈر سے یا جنت کی لالچ میں عبادت کریں وہ عبادت بھی مقبول ہے، لیکن عبادت کا اعلی مقام یہ ہے کہ اللہ کی رضا اور اللہ کا قرب حاصل کرنے کے لئے عبادت کریں. اور جب عبادت اس غرض سے ہوگی تو یقیناً اللہ کا قرب حاصل ہوگا، اور وہ بندہ اللہ کا محبوب اور مقرب ہوگا. اللہ تعالیٰ ہمیں رمضان المبارک میں عبادتوں میں مشغول رہنے کی توفیق عطا فرمائے اور اپنے مقرب بندوں میں شامل فرماءے آمین

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: