اہم خبریں

امیر الہند استاذ محترم دارالعلوم دیوبند کے کار گذار مہتمم واستاذ حدیث جمعیت علماء ہند کے صدر حضرت مولانا سید قاری محمد عثمان صاحب منصورپوری

امیر الہند استاذ محترم دارالعلوم دیوبند کے کار گذار مہتمم واستاذ حدیث جمعیت علماء ہند کے صدر حضرت مولانا سید قاری محمد عثمان صاحب منصورپوری ؒکی وفات ملت اسلامیہ ہند کیلئے ایک عظیم سانحہ ہے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
حضرت قاری صاحب ؒکی ولادت یوپی کے ضلع مظفر نگر کے معروف ومشہور قصبہ منصور پور میں 12اگست 1944ءکو سید خاندان کے ایک معزز اور زمیندار گھرانے میں ہوئی ۔آپکا نام محمد عثمان بن نواب سید عیسیٰ ہے۔
ابتدائی تعلیم آپنے اپنے وطن مالوف میں رہ کر کی،اپنے والد صاب مرحوم کے پاس حفظ کیا۔پھر فارسی درجات سے دورۂ حدیث تک کی مکمل تعلیم دارالعلوم دیوبند میں کی۔اور ہمیشہ امتیازی نمبرات سے کامیاب ہوتے رہے۔
1965ء میں دورۂ حدیثکے امتحان میں اول پوزیشن حاصل کی،1966میں دیگر فنون کی تکمیل کی۔جبکہ عربی زبان وادب میں ادیب اریب حضرت مولانا وحیدالزمان صاحب کیرانویؒ سے کمال حاصل کیا۔
تعلیم سے فراغت کے بعد 5/سال جامعہ قاسمیہ گیا بہار میں اور گیارہ سال جامعہ اسلامیہ جامع مسجد امروہہ میں تدریسی خدمات انجام دی،تدریس کے ساتھ ساتھ آپ ملت کے مسائل سے بھی باخبر رہے،1979میں ملک وملت بچاؤ تحریک کے پہلے دور میں ایک جتھے کی قیادت کرتے ہوئے گرفتاری دی اور دس دن تہاڑ جیل میں رہے۔
1982ء میں آپکا تقرر دارالعلوم میں ہوا،اور اس وقت سے اب تک برابر درس و تدریس کے ساتھ مختلف انتظامی ذمہ داریاں بحسن خوبی انجام دیتے رہے، اپکا درس حشو زائد سے پاک انتہائی سنجیدہ اور عالمانہ ہوتا تھا۔
اسلام کے دفاع اور مسلک دیوبند کے تحفظ کے جذبہ سے آپ نے کارہائے نمایاں انجام دیے ہیں
1/اکتوبر 1986ء میں عالمی اجلاس تحفظ ختم نبوت کا انعقاد ہوا۔جسمیں آپ ناظم منتخب ہوئے ،آپ نے ملک کے طول وعرض میں فتنۂ قادیانیت کی سرکوبی کیلئے عظیم تر خدمات انجام دیں،جو دارالعلوم دیوبند کی تاریخ کا ایک سنہرا باب ہے۔

آپ حسن وجمال،شرافت ونجابت،تقویٰ وطہارت اور دیگر بہت ساری خصوصیات میں اکابر واسلاف کی یادگار اور نمونہ تھے،خوش مزاج،کم گو،پاکیزہ طبیعت کے حامل تھے،
آج مورخہ ۸/شوال عین جمعہ کے وقت اس دارفانی سے رخصت ہوگئے ،آپکی وفات پوری ملت اسلامیہ ہند کیلئے ایک عظیم سانحہ ہے،جسکی تلافی بڑی مشکل معلوم ہوتی ہے۔

اللہ پاک سے دعا ہےکہ حضرت قاری صاحب مرحوم کی خدمات جلیلہ کو قبول فرمائے،انکی قبر کو نور سے بھردے جنت کا باغ بنادے ،انکی حسنات کو قبول فرمائے ،سئیات کو درگذر فرمائے ،پسماندگان کو،متعلقین ،متوسلین ،محبین کو صبر جمیل عطا فرمائے
ہم سب کو بالخصوص دارالعلوم دیوبند کو اسکا نعم البدل عطا فرمائے(آمین)

تنویر احمد قاسمی
استاد مدرسہ تعلیم الدین قاسم پورہ پراناپل بنارس

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: