اہم خبریں

ایمان کے لیٹروں سے ہوشیار رہنے کی ضرورت: امیر شریعت صوبہ دہلی۔

ایمان کے لیٹروں سے ہوشیار رہنے کی ضرورت: امیر شریعت صوبہ دہلی۔
4؍ جولائی 2022۔ پریس ریلیز
انسان کی سب سے بڑی دولت ایمان ہے، جس کی حفاظت کرنا ہر صاحب ایمان کا اولین فریضہ ہے۔ یہ فتنوں کا دور چل رہا ہے۔ ایمان کے لیٹرے کبھی دوست کے بھیس میں اور کبھی دشمن کے بھیس میں ہمارے دلوں سے ایمان نکالنے کے لیے شب و روز سازشوں میں لگے ہوئے ہیں، ہمیں اس سے چوکنا رہنے کی ضرورت ہے؛ ان خیالات کا اظہار مولانا شمیم احمد صاحب امیر شریعت صوبہ دہلی و امام و خطیب مدینہ مسجد جعفرآباد نے ، آج اسی مسجد میں بعد نماز عشا پندرہ روزہ محاسبہ ایمان پروگرام میں کیا۔ انھوں نے مزید کہا کہ یہ پروگرام ہمارے ایمان کا نہ صرف تحفظ کرے گا؛ بلکہ اس میں اضافہ اور پختگی کا سبب بنے گا، ان شاء اللہ تعالیٰ۔
اس سے قبل مفتی اسعد الدین صاحب ناظم امارت شرعیہ ہند جمعیت علمائے ہند نے اپنے خطاب میں ایمان کی اہمیت اور اس کی ضرورت کو اجاگر کیا اور لوگوں کو اس پروگرام سے جڑنے کی اپیل کی۔
مولانا محمد یاسین جہازی معتمد شعبہ مرکز دعوت اسلام جمعیت علمائے ہند نے جعفرآباد میں مسلم آبادی کے اعدادوشمار پیش کرتے ہوئے بتایا کہ یہاں تقریبا ستر فی صد یعنی چالیس ہزار کے قریب مسلمان آباد ہیں، لیکن ان میں سے صرف بارہ ہزار مسلمان ہی دینی تحریکوں سے براہ راست وابستہ ہیں۔ بقیہ اٹھائیس ہزار مسلمان ان تحریکوں سے دور ہیں، اس لیے ان کا ایمان کمزور ہوتا جارہا ہے، ایسے میں ہمیں محاسبہ کرنے کی ضرورت ہے۔ مولانا نے پروگرام کی تفصیل بتاتے ہوئے کہا کہ جمعیت علمائے ہند کے زیر اہتمام شعبہ مرکز دعوت اسلام نے نوجوانوں، عمر رسیدہ، پڑھے لکھے اور ناخواندہ افراد کے ایمان کے محاسبہ کے لیے پندر ہ روزہ ایک کورس تیار کیاہے، جس میں عقائد و اعمال کے بارے میں بنیادی و ضروری معلومات پر مشتمل ہے۔
اس پروگرام میں مرکزی دفتر جمعیت علمائے ہند سے مولانا عظیم اللہ صاحب قاسمی ناظم شعبہ نشرواشاعت، مولانا ضیاء اللہ صاحب قاسمی منیجر الجمعیۃ بکڈپو، مفتی اسعد الدین صاحب قاسمی ناظم امارت شرعیہ ہند جمعیت علمائے ہند، مولانا معظم عارفی صاحب ناظم شعبہ اصلاح معاشرہ جمعیت علمائے ہند اور مولانا اخلاق حسین قاسمی امام و خطیب مدینہ مسجد مصطفیٰ آباد نے شرکت کی ۔ اس سے ایک دن پہلے مولانا حکیم الدین صاحب قاسمی ناظم عمومی جمعیت علمائے ہند اور مولانا غیور احمد قاسمی آرگنائزر جمعیت علمائے ہند اس مسجد میں پہنچے، جہاں مولانا ناظم عمومی صاحب نے اپنے پر سوز خطاب میں اس پروگرام کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے لوگوں کو اس کی ضرورت بتائی اور جمعیت علمائے ہند کی فکرمندی کو ظاہر کیا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
%d bloggers like this: