اہم خبریں

کالے قانون کے خلاف بسنت راءے میں عوام کا امڈا سیلاب

ضلع گڈا کے بسنت راءے بلاک میں زبردست احتجاجی مظاہرہ

گڈا جھارکھنڈ/ رپورٹ : محمد سفیان القاسمی ایڈیٹر جہازی میڈیا جھارکھنڈ

سی اے اے اور این آر سی کے خلاف احتجاج کا دائرہ دن بدن وسیع ہوتا جا رہا ہے. اسی سلسلے کی ایک کڑی کے طور پر گڈا ضلع کے بسنت راءے بلاک میں ہندوؤں مسلمانوں اور آدی واسیوں کا زبردست مظاہرہ ہوا، اس احتجاجی پروگرام میں سبھی مذاہب اور سبھی طبقات کے لوگ شامل تھے، سی اے اے، این آر سی اور این پی آر کے خلاف لوگوں کا ہجوم اتنا زیادہ تھا کہ پورا ہائ اسکول میدان بھرا ہوا تھا گویا عوام کا ایک امنڈتا ہوا سیلاب تھا.

پروگرام کا آغاز راشٹریہ گان سے ہوا، پھر نظم سارے جہاں سے اچھا ہندوستان ہمارا پڑھی گئی، اس احتجاجی مظاہرہ کا عنوان تھا سمودھان بچاؤ دیش بچاؤ ریلی ،جس کی صدارت مولانا مبارک حسین صاحب قاسمی نے کی جبکہ نظامت کے فرائض مفتی سفیان ظفر قاسمی نے انجام دیئے . کئی مقررین نے مظاہرین سے خطاب کیا جن میں مفتی نظام الدین قاسمی مفتی زاہد امان قاسمی سنجے یادو ،اجیت مہتو، راجیش منڈل، اشوک ساہ، رفیق عالم، محمد انظر محمد احتشام، گریس پاسوان، محمد احتشام کیلاش پنڈت؛ گھنسیام سلیمان جہاں گیر، مولانا یاسین،محمد عالمگیر مکھیا عرفان، محمد ناہید، بھارت پنڈت، گڈو یادو وغیرہ وغیرہ تھے اخیر میں بلاک پہنچ کر صدر جمہوریہ اور چیف جسٹس کے نام میمورنڈم پیش کیا گیا. اس میں ایک اعلان یہ بھی کیا گیا کہ 20 جنوری کو ضلع گڈا میں ہونے والے عظیم الشان احتجاجی مظاہرہ میں بھی لوگ اسی طرح جوش و خروش کے ساتھ شرکت کریں،

پروگرام گیارہ بجے سے شروع کر تین بجے تک چلا جس میں قرب و جوار کے دوسرے بلاک سے بھی بڑی تعداد میں لوگ شریک ہوئے تھے جن میں بطور خاص مفتی اقبال قاسمی ،مولانا حامد الغازی،مولانا ریاض اسعد مظاہری ،مولانا سرفراز قاسمی،مولانا مسعود قاسمی، قاری ارشاد، مفتی عبد اللہ قاسمی، مولانا قمرالزماں ، قاری فیروز صاحب وغیرہ تھے

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close