اہم خبریں

ایک معذور بچہ جو معذور بچوں کی آواز بن گیا!

نقی احمد ندوی، ریاض، سعودی عرب

یہ کہانی ہے ایک ایسے بچہ کی جسکو دوسال کی عمر میں دماغ کی ایک ایسی بیماری ہوگئی جس نے اس کی زندگی بدل کر رکھ دی۔ وہ آٹھ سال کی عمر تک پہونچتے پہونچتے اس خطرناک بیماری سے اس قدر متاثر ہوگیا کہ اب وہ معذور بچوں میں شمار ہونے لگا۔ Tourette Syndrome, severe Obsessive Compulsive Disorder (OCD) اورAspergers Syndrome (ASP – a broad spectrum Autism Disorder)، جیسی خطرناک بیماریاں اس کو لاحق ہوگئیں۔ یہ ساری بیماریاں دماغ کے حصوں کو متاثر کرتی ہیں جن کی وجہ سے انسان کانربھس سسٹم متاثر ہوجاتا ہے۔ وہ ٹھیک سے حرکت نہیں کرپاتا اور اس کو اپنی آواز، اپنے اعضاء اور اپنے حرکات وسکنات پر قابو نہیں رہتا، جس کی وجہ سے وہ طرح طرح کی آوازیں نکالتا ہے، ایک ہی حرکت باربار کرتا ہے اور بے چین رہتا ہے۔ ایسے بچوں کو لکھنے پڑھنے اور دوسروں سے انٹریکشن کرنے میں بہت زیادہ دقت ہوتی ہے۔

جب وہ بڑا ہوا تو اس کے والدین نے اس کو چھوٹے سے اسکول میں ایڈمیشن کرایا تاکہ بچے اسے پریشان نہ کریں۔ مگر اسکول میں دوسرے بچے اس کو پریشان کرتے، اس کا مذاق اڑاتے اور اس کو طرح طرح سے زودوکوب کرتے، یہ سب کچھ بچے ہنسی مذاق میں کرتے، اسی کو بلینگ یا ریگرنگ کہا جاتا ہے۔اسکول میں بچے جب اسے پریشان کرتے اور مذاق اڑاتے تووہ بہت اداس ہوجاتا۔ ایک دن اس نے فیصلہ کیا کہ اس پر جو کچھ گذر رہا ہے وہ کسی دوسرے بچے پر نہ گذرے اس لئے اسے کچھ کرنا چاہیے۔ اس ننھی سی عمر میں اداس ہونے اور ہمت ہارنے کے بجائے اس نے ٹھان لیا کہ اس قسم کے دوسرے تمام معذور بچوں کے لئے وہ آواز اٹھائے گا اور بچوں کو اور لوگوں کو سمجھائیگا کہ وہ ایسے معذور بچوں کو ان کی معذوری کی وجہ سے پریشان نہ کریں بلکہ ان کو عزت دیں۔ اور اسکول میں ریگنگ اور ایک دوسرے بچے کو پریشان کرنے کا رواج ختم کیا جائے۔

سب سے پہلے اس نے اپنی ماں روبین آرنلڈ کے ساتھ مل کر بچوں کو اسکول میں پریشان کرنے کے خلاف ایک ویب سائٹ کھولی اور اس پر کام کرنا شروع کیا۔ اس کے بعد وہ دوسرے اسکولوں میں جا نے لگا اور بچوں کو سمجھانے لگا کہ وہ اسکول میں کیسا رویہ اپنے دوستوں کے ساتھ رکھیں اور ایک دوسرے کوپریشان کرنے سے وہ بچیں۔

وہ اپنے ویب سائٹ https://www.jaylenschallenge.org پرلکھتا ہے۔

مہینوں دوسرے بچوں کے ذریعہ پریشان کئے جانے کے بعد میں نے یہ فیصلہ کیا کہ مجھے لوگوں کو ایک دوسرے کو پریشان نہ کرنے اور ایک دوسرے کی عزت کرنے کے بارے میں کچھ کرنا پڑیگا۔ جب میں آٹھ سال کا تھا تو اس وقت میں نے یہ عزم کیا ایک دن یو ٹیوب اور ٹیلی ویزن پر میں ضرور آونگا اور یہ پیغام ضرور نشر کرونگا کہ: اسکولوں میں ریگنگ اور ایک دوسرے بچوں کو پریشان کرنے کا رواج ختم ہونا چاہیے۔

اس نے ایک مختصر عرصہ کے بعد ایک فاونڈیشن قائم کیا جس کا نام ہے Jaylens Challenge Foundationاس فاونڈیشن کے پلیٹ فارم سے اس نے امریکہ کے ہر اسٹیٹ میں کلاس اور اسکول میں خاص طورپر معذور بچوں کی ہراسانی کے خلاف مہم چھیڑدی۔ اس نے ایک بریسلٹ بھی جاری کیا جس پر لکھا ہوتا ہے۔ اسکول میں اب کوئی پریشان نہیں کریگا۔وہ کئی سال تک محنت کرتا رہا، اس کی محنت رنگ لائی۔ اس کی آواز پورے امریکہ میں سنے جانے لگی۔ اب تک اس نے بہت سے اسکولوں میں اپنے پروگرام کے ذریعہ ایک لاکھ سے زائد بچوں کو ٹریننگ دے چکا ہے کہ اسکول میں کسی بھی بچہ کو اس کی معذوری یا رنگ یا نسل یا کسی اور وجہ سے پریشان نہیں کرنا چاہیے بلکہ ہر ایک کو دوسرے کی عزت کرنی چاہیے۔

اس بچہ کا نام جیلین آرنلڈ ہے، جو اب تییس سال کا ہوچکا ہے اوراس نے پوری دنیا میں اپنے اس نیک عمل کی وجہ سے کافی شہرت حاصل کرلی ہے۔ جیلین کو اپنے اس انوکھے مہم کے لئے کئی ایوارڈ بھی دیئے جاچکے ہیں۔ اس کی کامیابی کا اندازہ اس بات سے لگا یا جاسکتا ہے کہ جیلین پہلا امریکی شہری ہے جس کو ڈائینا لیگیسی ایوارڈبرطانیہ کے شہزادوں نے اپنے ہاتھوں سے دیا ہے۔ وہ دنیا کے مشہور ٹی وی پروگرام”The HALO Effect میں بھی آچکا ہے۔ کئی ڈکومنٹری میں وہ شامل ہوچکا ہے۔ دنیا کے کئی ممالک میں اس کی تقریریں ہوچکی ہیں۔ ہالی ووڈ کے کئی بڑے ستاروں کے ساتھ اس نے اس موضوع پر کئی جگہ خطاب کیا ہے اور اسٹیج شئیر کیا ہے۔ اس کے بریسلٹ کو ہالی ووڈ کے کئی مشہور ہستیوں نے اپنے ہاتھ پر باندھ کر اس کو سپورٹ کیا ہے۔

قرآن میں حکم ہے کہ لا یسخر قوم من قوم عسی ان یکونوا خیرا منہم۔ تم میں سے کوئی قوم کسی دوسری قوم کا مذاق نہ اڑائے، شاید وہ ان سے بہتر ہوں۔ ااور یہی بات سچ کردکھائی جیلین نے، جس کو دوسرے بچے اس کی معذوری کی وجہ مذاق اڑاتے تھے، پریشان کرتے تھے، اور زودوکوب کرتے تھے، آج وہ اپنی مثبت سوچ اور مسلسل محنت کی وجہ پوری دنیا میں معذور بچوں کی آواز بن چکا ہے۔ اس نے ایک کتاب بھی تیار کی ہے جس میں معذور بچوں کے متعلق ان کے ساتھ کیسے پیش آیا جائے اور کیسے ان کو اچھا ماحول فراہم کیا جائے پوری تفصیل کے ساتھ ایک بہترین گائیڈ لاینس پیش کی ہے۔ اور جسے دنیا کے کئی اسکولوں نے اپنے یہاں نافذ کیا ہے۔

https://www.famousbirthdays.com/people/jaylen-arnold.html

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close