مضامین

بنگال کی شیرنی: ممتا بنر جی "دیدی” اور عوام کو جیت مبارک ہو!

*تحریر: حافظ محمد ہاشم قادری مصباحی جمشید پور*

دنیا کا کوئی بھی شعبہ ہو، سیاست ہو، کوئی بھی پارٹی ہو، کوئی کتنا ہی بڑا کیوں نہ ہو،کوئی بھی ناقابلِ تسخیر نہیں، جسے ہرایا نہ جاسکے جسے فتح نہ کیا جاسکے،جو قابو میں نہ آسکے،کڑی محنت جہد مسلسل اور ہمت سے ہی کامیابیوں کی سیڑھیاں طے ہوتی ہیں۔
؎ اُسے مل گئی جاوداں زندگی ٭ جو سعی ئے مسلسل کا پابند ہے
(بدر عالم بدرالقادری)
بنگال کیالیکشن میں ممتا بنر جی(عرفِ عام میں) ”دیدی بہن“ جس کا مذاق مودی نے ‘ دیدی اُو دیدی ‘ ‘Didi o Didi’ کہکر خوب اُڑایا اپنی سوچ میں ذلیل کیا، بے عزت کیا، لیکن ایک ذمہ دار عہدہ پر براجمان شخص کی زبان اور سوچ اس حد تک گر جائے گی لہجہ اس قدر نازیبا ہو گا کبھی کسی عزت دار شخص نے ایسا سوچا نہ ہو گا۔یہی وجہ ہے ساری دنیا میں اس کی مذمت ہوئی انٹرنیشنل میڈیا نے اس کا نوٹس لیا تبصرے ہوئے۔ حیا مگر تم کو نہیں آتی؟۔
بنگال کے الیکشن میں ممتا بر جی کی شاندار کامیابی سے سیاست میں نئی آہٹ نئی اُمید دکھائی دینے لگی ہے۔ ہر فِر عون را مُو سیٰ و ہر نمرُو دَے را پشّہ۔ ہر فر عون کے لیے مُوسیٰ اور ہر نمرُود کے لیے مچھر ہوتا ہے، سیر کو سوا سیر، طاقتور کے لیے طاقتور موجود ہوتا ہے، قدرت کا نظام اٹل ہے ہر ظالم کی سر کوبی کے لیے کوئی نہ کوئی نیک بندہ پیدا ہوتا ہے۔
سالوں سال سے بنگال پر مسلط سخت گیر عزائم رکھنے والی سیاسی پارٹی کے سر براہان نے اپنی جیت،اپنی پکڑ پکی کرنے کے لیے پوری طاقت سے لگے ہوئے ہیں اور اس کے لیے سام، دام،ڈنڈ، بھید۔ چا نکیہ نیتی میں لگے ہوئے ہیں،پرائم منسٹر،ہوم منسٹر،بی جی پی کے صدر سے لے کر تمام بڑے لیڈران لگے رہے اور اپنی پوری طاقت جھونک دی2 ” مئی دیدی گئی ” کا وظیفہ پڑھتے رہے اس میں بھی خوب طنز کیا مذاق اُڑایا (اور اپنی شرافت وظرافت و خباثت کا) خوب خوب مظاہرہ کیا۔ ‘سلام ہو سو بار سلام ہو’ بنگال کی شیر نی اکیلے دم پر خوب لڑی اور جو لوگ یہ سوچ بیٹھے تھے کہ بی جے پی کو ہرانا نا ممکن ہے اُس کو جھوٹا ثابت کر دیا اور بڑوں بڑوں کو حیرت زدہ کردیا اور اپنے مخالفین بڑے بڑے دگجوں کو چاروں شانے چت کر دیا۔ 73 سیٹیں جو آئیں ہیں جس پر بی جے پی اپنی کامیابی کا جشن منارہی ہے وہ بھی دراصل(پپو کی کمزوری سے،نانی کی بیماری سے،یوپی کی دیدی کی دوری) سے جنہوں نے بنگال کو یتیم بیوہ کی طرح بغیر لڑے چھوڑ دیا)اور اپنے گڑھ مر شدآ باد،مالدہ کے علاقے کو بھی گنوا دیا اور یہ ثابت کردیا کہ اب یہ ڈوبتا جہاز ہے اس پر جو سوار ہوگا وہ بھی ڈوب جائے گا۔ دیدی تو یوپی کے علاوہ کہیں جانا پسند ہی نہیں کرتیں جاتی بھی ہیں تو ایک بار دوبار اس سے اب بات بننے والی نہیں ہے آپ کی جگہ لینے والی مخالف پارٹی کے لیڈران 30 تیس بار جاکرکمپیننگ کر رہے ہیں، ایک دو جگہ ایک دوبار جانے سے بات بننے والی نہیں ہے سیاست میں قدم رکھا ہے تو سامنے والی پارٹی کو دیکھ کر سبق لینا ہوگا۔
*ممتا بنر جی سے جُڑی ہیں کل کی اُمیدیں!* :
بنگال کے عوام مبارک باد کے مستحق ہیں! اور دیدی تو جیت کی ہیرو ہے اتنی بڑی طاقت سے جیتنا یقینا اچھا لگتا ہے لیکن سچ تو یہ بھی ہے کہ عوام کی اُمیدیں،خواب بھی ہیں ممتادیدی کو اپنی پوری قوت اور پوری ٹیم کے ساتھ سبھی ذات،دھرم امیر،غریب اور اُن کی امیدوں کو بھی پوری کرنے کی کوشش کرتے رہنا ہوگا جو ان کے نہیں ہیں اور فرقہ پرستی کے زہر کو ختم کرتے رہنے کی کوشش کرتے رہنا ہوگا ویسے یہ زہر2 پلس4 پلس 8 پلس16 کی تیزی سے بڑھ رہا ہے کیوں کہ یہ موجودہ حکومت کی کھیتی اور کھاد ہے۔اور قریب قریب سبھی اس خمیر کو اپنے اپنے طریقے سے استعمال کر رہے ہیں کوئی بھی صحیح نہیں ہے۔ ممتا بنر جی کو عوام کے ساتھ تمام سیاسی پارٹیوں کو اکھٹا کرنا ہوگا کیونکہ اپوزیشن کا بکھراؤ ہی بی جی پی کی طاقت ہے وہ جانتی ہے کہ ہمارا کوئی کچھ بگاڑ نہیں سکتا ممتا کے اندر جوجھنے،لڑ نے کی قوت بدرجہا اتم موجود ہے سب کو اکھٹا کر نے کی شروعات کردینا چاہیے ویزن آف2024 کی تلاش ابھی سے ہی شروع کرنا اور بیڑا اٹھانا چاہیے۔
*رسوائی بڑا عذاب ہے اللہ اس سے بچائے:*
جیسے کورونا عذاب الٰہی بنا ہوا ہے،اسی طرح ذلت ورسوائی بھی بڑا عذاب ہے جس سے ابھی موجودہ بی جے پی پارٹی دوچار ہے۔ جو پارٹی سالوں پہلے اپنی جیت کے لیے کوشش شروع کردے اور اسے ذلت آمیز ہارسے دو چا رہونا پڑے یقینا بڑی شرم کی بات ہے۔ذلت کے اس احساس کو کم کرنے کے لیے جیتی ہوئی شیرنی کو دوبارہ اعلان کرکے ہرا دیا گیا اعلان سنتے ہی بی جے پی والے ایسا ناچنے لگے جیسے پورا بنگال جیت گئے ہوں؟ اسی کو کہتے ہیں ‘کھسیانی بلی کھمبا نوچے ‘ گودی میڈیا سے لیکر بی جی پی کے بڑے بڑے سب اس بات کا اعلان کر رہے تھے اس بار دوسو پار ہو یہ کہ تیسرا فیگر بھی پار نہیں ہوا یہ سب بنگال کی سمجھ دار عوام اور دیدی کی کڑی محنت اور لگن سے ممکن ہوا ایک بار پھر تمام عوام اور دیدی کو مبارک پیش ہے۔09279996221-
حافظ محمد ہاشم قادری صدیقی مصباحی خطیب و امام مسجد ہاجرہ رضویہ اسلام نگر کپالی وایا مانگو جمشیدپور جھارکھنڈ

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: