اہم خبریں

جامعہ نعمانیہ،میں اختتامی پروگرام بحسن خوبی انجام پزیر

ابو معاویہ محمد معین الدین ندوی قاسمی خادم التدریس جامعہ نعمانیہ، وی کوٹہ، آندھرا پردیش

**

ملک کے طول و عرض میں تقریباً دوسال کے بعد امسال ان دنوں کہیں مسابقاتی پروگرام ، تو کہیں سالانہ اختتامی پروگرام، تو کہیں تقریب ختم بخاری شریف، تو کہیں تکمیل حفظ قرآن مجید کی محفلیں بڑے تزک و احتشام سے منعقد ہورہی ہیں، اللہ تعالیٰ ان تقریبوں کو شرف قبولیت عطا فرمائے (آمین)
دوسال قبل 2020/ء میں، اسی ماہ مارچ غالباً 5/تاریخ کو ہمارے جامعہ نعمانیہ وی کوٹہ، چتور، آندھرا پردیش میں بڑے آب و تاب کے ساتھ طلبہ جامعہ کا سالانہ اختتامی مسابقاتی اور انعام پروگرام منعقد ہوا تھا، اور پھر اس کے بعد ہی عالمی وباء "کرونا وائرس” کی وجہ سے ہمارے ملک ہندوستان ہی نہیں بلکہ پوری دنیا لاک ڈاؤن (تالابندی ) کی زد میں آئی، اور مکمل طور پر سارا عالم منجمد سا ہو گیا تھا۔
الحمدللہ! امسال رمضان المبارک کے بعد شوال کے اواخر اور ذوالقعدہ کے اوائل سے ہی اکثر وبیشتر مدارس میں تعلیم شروع ہوئی، ہمارے جامعہ میں بھی باضابطہ تعلیم کا آغاز ہوا، تو شعبہ تقریر و خطابت کا سلسلہ بھی جاری ہوا، آج اسی شعبہ کا اختتامی مسابقاتی و انعامی پروگرام منعقد ہوا، زیر صدارت: حضرت مولانا سید ظہیر احمد صاحب قاسمی دامت برکاتہم (بانی و مہتمم:جامعہ نعمانیہ وی کوٹہ) زیر عنایت: حضرت مولانا قاضی شیخ مبارک صاحب قاسمی دامت برکاتہم (نائب مدیر جامعہ نعمانیہ وی کوٹہ) اور مہمان خصوصی حضرت قاری سید نظام الدین صاحب رحیمی دامت برکاتہم (امام و خطیب:جامع مسجد وی کوٹہ) گو بعض عوارض کی وجہ سے مہمان خصوصی شرکت سے رہے۔
اس تقریری پروگرام میں جامعہ کے 12/طلبہ شریک ہوئے ، جو مختلف عنوانات سے مختلف انداز میں خطاب کئے، بعد نماز ظہر پروگرام کا آغاز جامعہ کے استاذ حضرت قاری ابراہیم صاحب رحیمی کی تلاوت کلام اللہ سے ہوئی، اور نبی کریم ﷺ کی خدمت اقدس میں مدحت رسول پیش کرنے کا شرف جامعہ کے طالب علم محمد ذیشان سلمہ کو حاصل ہوا، اس کے بعد باضابطہ مسابقاتی خطابت کا دور شروع ہوا جو پونے پانچ بجے تک جاری رہا، نظامت کے فرائض جامعہ کے طالب علم مولوی افضل سلمہ (عربی پنجم) نے بحسن خوبی انجام دئیے، درمیان میں ایک دو نعت و نظم بھی پڑھی گئی تاکہ سامعین پر کیف و نشاط باقی رہے۔
اس مسابقاتی پروگرام میں حکم کے فرائض جامعہ کے دو اساتذہ حضرت مولانا سید ضیاء اللہ صاحب قاسمی دامت برکاتہم اور مفتی ابوبکر صدیق صاحب قاسمی دامت برکاتہم نے ادا کئے، آخری تقریر کے بعد فوراً ہی نمبرات جمع کیا گیا، اول پوزیشن: محمد عاقب (عربی اول) دوم پوزیشن: مولوی عبدالقدیر (عربی پنجم) اور سوم پوزیشن سے محمد ابراہیم (فارسی) کامیاب ہوئے، ان کو گراں قدر انعامات اور دیگر تمام مساہمین کو تشجیعی انعامات سے نوازا گیا، انعامات کے بعد نائب عمید محترم حضرت مولانا شیخ مبارک صاحب قاسمی دامت برکاتہم کا مختصر مگر جامع کلمات ناصحانہ سے سامعین محظوظ ہوئے ، اخیر میں کلمات صدارت صدر جلسہ نے بہت ہی بلیغ اور نصیحت آمیز انداز میں ادا فرمائے، نیز اس پروگرام کے انعقاد پر خوشی و مسرت کا بھی اظہار فرمائے، اور حضرت صدر محترم کی دعا مستجاب پر پروگرام اختتام پذیر ہوا، اس موقع پر جامعہ کے تمام ہی اساتذہ کرام حضرت مولانا مظہر صاحب قاسمی دامت برکاتہم، حضرت مولانا عبدالقدیر صاحب رحیمی، ابو معاویہ محمد معین الدین ندوی قاسمی،حضرت حافظ ابراہیم صاحب دامت برکاتہم،حضرت حافظ جابر صاحب دامت برکاتہم،حضرت حافظ ایاز صاحب دامت برکاتہم، حضرت مولانا ابراہیم صاحب قاسمی دامت برکاتہم، جناب سید سبیل سر صاحب مولانا نیاز صاحب رحیمی (سابق مدرس جامعہ نعمانیہ) حافظ دل شاد صاحب (امام مسجد عمرفاروق،رحمت نگر)جناب عبداللطیف صاحب (متولی مکہ مسجد،قاضی پیٹ) موجود رہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: