اہم خبریں

جامعۃ الھدیٰ جہاز قطعہ گڈا جھارکھنڈ کی آغاز تعلیم کانفرنس کی مختصر رپورٹ

جامعۃ الھدیٰ جہاز قطعہ گڈا جھارکھنڈ کی آغاز تعلیم کانفرنس کی مختصر رپورٹ

10؍جون2024کو شام ساڑھے سات بجے مولانا قاضی شفیق صاحب کی صدارت میں جامعۃ الھدیٰ جہاز قطعہ گڈا جھارکھنڈ کی آغاز تعلیم کانفرنس ہوئی۔ جامعہ کے دو طالب علم: جناب حسنین اور جناب احتشام سلمھما نے تلاوت کی۔عزیزم سفیان سلمہ نے ہدیہ نعت پیش کیا۔بعد ازاں عزیزان اشتیاق اور سعید الزماں نے دس دس منٹ کی تقریر پیش کی۔مفتی محمد زاہد امان قاسمی بانی مہتمم جامعہ خدیجۃ الکبریٰ بسنت رائے نے علاقے کے تعلیمی و اعداد شمار پیش کرتے ہوئے اس کے معیار پر جامع رپورٹ پیش کی۔ بعد ازاں مولانا محمد یاسین جہازی قاسمی معتمد مرکز دعوت اسلام جمعیت علمائے ہند نے جامعۃ الھدیٰ کے وژن، مشن ، ہدف اورحالیہ رپورٹ پیش کرتے ہوئے ، جامعہ کے جائے وقوع کاجغرافیائی اعتبار سے جائزہ لیتے ہوئے اس کی اہمیت و ضرورت کو اجاگر کیا اور اگلے پانچ سال کا تعلیمی خاکہ پیش کیا۔

بعد ازاں جناب پروفیسر شاہد صاحب صدر شعبہ پی جی ڈپارٹمنٹ مونگیر یونی ورسٹی نے خطاب کیا ، جس میں انھوں نے تعلیم کو نبوی مشن قراردیتے ہوئے مسلمانوں سے اپیل کی کہ وہ تعلیم کو اپنا مقصد بنالیں۔ انھوں نے زور دے کر کہا کہ علم تو آپ کسی بھی زبان میں سیکھ سکتے ہیں، لیکن تہذیب سیکھنے کے لیے آپ کو اردو زبان سیکھنا ہی ہوگی۔

جناب سید اقبال رومی صاحب ضلع صدر بھاگلپور سماج وادی پارٹی نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ بھارت میں مسلمانوں کی ترقی کے لیے واحد راستہ یہی ہے کہ وہ تعلیم کو اپنا ہتھیار بنالیں۔ وہ جتنا تعلیمی میدان سے دور ہوں گے، اس کی پس ماندگی اسی درجہ بڑھتی رہے گی۔

پروگرام کے مہمان خصوصی جناب ڈاکٹر فاروق صاحب سابق وائس چانسلر چھپرا یونی ورسٹی نے کلیدی خطاب میں کہا کہ حکومت نے مسلمانوں سے کہا تھا کہ ان کے ایک ہاتھ میں قرآن ہوگا اور دوسرے میں کمپیوٹر؛ لیکن قرآن اور کمپیوٹر تو دور، اس کاتو وہ ہاتھ ہی کاٹ دیا گیا۔ انھوں نے جامعہ کی تاسیس کو قابل تعریف قدم قرار دیتے ہوئے بانیان جامعہ کو مبارک باد پیش کی اور علاقے میں تعلیمی انقلاب کے لیے اسے نیک فال قرار دیا۔

یہ پروگرام منٹ ٹو منٹ ٹائم کا پابند رہا ، اس لیے درج بالا حضرات کے علاوہ جن حضرات نے صرف اپنے تاثرات پیش کیے، ان میں جناب محمد افضل صاحب ممبئی،مولانا نذیر احمد نوشہ صاحب،مولانا سجاد ندوی صاحب، مولانا شمس پرویز مظاہری صاحب مہتمم مدرسہ دگھی، مولانا سلیم صاحب باگھا کول سابق صدر المدرسین مدرسہ اسلامیہ خرد سانکھی، مولانا عبدالرحمان بھسکا وغیرہ کے نام شامل ہیں۔

مفتی محمد نظام الدین قاسمی مہتمم جامعۃ الھدی نے نام بنام ان تمام حضرات کے لیےکلمات تشکر پیش کیے، جنھوں نے کسی بھی اعتبار سے جامعہ اور اس پروگرام میں اپنا تعاون پیش کیا اور اسے کامیاب بنانےمیں اپنا رول ادا کیا۔مولانا محمد یاسین جہازی نے نظامت کے فرائض انجام دیے۔ مولانا قاضی شفیق صاحب کے صدارتی خطاب کے بعد دعا کے ساتھ ٹھیک دس بجے رات یہ مختصر پروگرام اختتام پذیر ہوا۔

کانفرنس میں علاقے کے تقریبا تمام بڑے اداروں کے مہتمم صاحبان، سماجی شخصیات، سیاسی افراد ، بالخصوص مولانا سلیم الدین صاحب مدرسہ بدرالعلوم مہگاواں، مولانا الیاس ثمر صاحب کرما، مولانا مجیب الحق صاحب امام مسجد جھپنیاں، مولانا محسن صاحب بسی پور، قاری کلیم الدین صاحب خورد، جناب ارشد وہاب صاحب ضلع پریشد ، جناب مکھیا صغیر صاحب سستی پنچایت، جناب نصر الدین صاحب سابق مکھیا سستی پنچایت مولانا غلام رسول صاحب ریسمبا وغیر نے شرکت کی۔


Notice: Trying to access array offset on value of type bool in /home/uzvggxsy/public_html/wp-content/themes/jannah/framework/classes/class-tielabs-filters.php on line 340

Notice: Trying to access array offset on value of type bool in /home/uzvggxsy/public_html/wp-content/themes/jannah/framework/classes/class-tielabs-filters.php on line 340

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close