اہم خبریں

جامعۃ الہدی جہازقطعہ ضلع گڈا کا سنگ بنیاد

پیر طریقت حضرت مولانا شاہ احمد نصر صاحب بنارسی دامت برکاتہم کے ہاتھوں

8/ربیع الثانی 1443 ھ مطابق 14/ نومبر 2021ء بروز اتوار بعد نماز عصر جامعۃ الہدی جہازقطعہ ضلع گڈا کا سنگ بنیاد عمل میں آیا. بعد نماز مغرب تلاوت کلام اللہ سے باقاعدہ پروگرام کا آغا ز ہوا، مولانا شمیم صاحب کوریانہ نے بارگاہ رسالت میں نذرانہ عقیدت پیش کیا ۔ مفتی محمد نظام الدین صاحب قاسمی نے پروگرام میں آنے والے تمام مہمانوں اور ان کی محبتوں کا بے حد شکریہ ادا کرتے ہوئے یہ کہا کہ یوم اطفال کے موقع پر جامعۃ الہدی کا سنگ بنیاد انشاء اللہ ادارے کے لیے بابرکت ثابت ہوگا اور قرآن کریم کی آیت مبارکہ سے اخذ کر کے کہا کہ یہاں تعلیم حاصل کرنے والے بچے اور اساتذہ دنیا و آخرت میں بشارت و رحمت کے مستحق ہوں گے۔ انشاء اللہ
پیرطریقت حضرت مولانا شاہ احمد نصر صاحب بنارسی دامت برکاتہم نے قیمتی نصائح سے لوگوں کو نوازا اور فرمایا کہ یہ کام بہت اونچا اور بہت بڑا ہے، بڑوں کی رہنمائی اور سرپرستی میں اس کام کو انجام دیا جائے تو انشاء اللہ بہت جلد یہ ادارہ تعلیمی ، تربیتی ، اصلاحی ہر اعتبار سے ترقی کی راہ پر گامزن ہوگا۔ اکابرین کی ہدایات کی روشنی میں ہی ہمیں اس کام کو کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے یہ بھی فرمایا کہ ہمیں اپنے ایمان و عمل کو مضبوط کرنے اور درست کرنے کی ضرورت ہے، ہم لوگوں کو فائدہ پہونچائیں یا کم از کم ہمارے شر سے لوگ محفوظ رہیں۔
جناب مولانا ادریس صاحب مہتمم مدرسہ امداد العلوم کیوں نے یہ کہا کہ سنگ بنیاد کا موقع قبولیت دعا کا موقع ہوتا ہے اس لیے آج ہم سب کو دل کھول کر اور جی بھر کر دعا مانگنی چاہیے انہوں نے یہ بھی کہا کہ جامعۃ الہدی کے بانی و مہتمم کی سب سے بڑی خوبی اور کامیابی کا راز یہ ہے کہ صلاحیت مند ہونے کے ساتھ ساتھ اکابرین اور اسلاف کے مشورے سے سارا کام انجام دیتے ہیں اور ان کے سایہ و سرپرستی میں جینے کا ہنر جانتے ہیں۔
جناب مفتی خلیل احمد صاحب قاسمی استاذ حدیث اصلاح المسلمین چمپانگر بھاگلپور نے یہ کہا کہ یہ دینی کام اسی وقت اہم اور معتبر سمجھا جاتا ہے جب کہ خلوص للہیت کے ساتھ کیا جائے اور ایک دوسرے سے تقابل مقصد نہ ہو۔
جناب مولانا سلیم الدین صاحب قاسمی نے یہ کہا کہ مفتی نظام الدین صاحب اور ان کے رفقاء کار بے پناہ مبارک بادی و شکریہ کے مستحق ہیں جنہوں نے یہ خوبصورت پروگرام سجایا اور جامعۃ الہدی کے نام سے مدرسوں کی تاریخ میں ایک زریں اور خوبصورت باب کا اضافہ کیا۔
جناب مولانا الیاس ثمر صاحب قاسمی نے کہا کہ آج کا یہ خوبصورت پروگرام ادارہ کے بانی و مہتمم مفتی نظام الدین صاحب قاسمی کی صلاحیت ، صالحیت اور قابلیت و قبولیت کا حسین نظارہ ہے، اللہ پاک اس ادارہ کو قبولیت سے نوازے اور ہر طرح کے شرور و فتن سے محفوظ فرمائے۔
بہت سارے علماء و دانشوران نے واٹس ایپ پر جامعۃ الہدی کے سنگ بنیاد پر مفتی محمد نظام الدین صاحب کو مبارکبادی دی، اور یہ کہا کہ ہم سبھی لوگ ہر اعتبار سے آپ کے قدم بقدم ساتھ کھڑے ہیں اور دامے ، درمے ، سخنے تعاون کے لیے ہمہ وقت تیار ہیں۔
اخیر میں مولانا شمیم صاحب کوریانہ نے منظوم استقبالیہ پیش کیا ۔ پروگرام میں علاقے کے سینکڑوں علماء اور دانشوروں نے شرکت کی بطور خاص جناب مولانا اقبال صاحب رینگاؤں، مولانا شمس پرویز صاحب دگھی، مولانا قمرالزماں صاحب دگھی، مولانا عبدالعزیز صاحب ملکی، کلکتہ سے جناب شکیل صاحب، جناب شمیم صاحب، جلال آبادیوپی سے جناب محمد راشد صاحب۔ جناب سجاد صاحب ندوی ، جناب مولانا تسلیم صاحب قاسمی ، روزنامہ انقلاب کے رپورٹر جناب تسنیم کوثر صاحب، جناب انظر صاحب بسنت رائے،جناب شریف صاحب ڈائریکٹر جامعہ ام سلمیٰ بسنت رائے، جناب نذیر صاحب پرنسپل مولانا آزاد دکالج بسنت رائے گڈا،جناب مفتی زاہد امان صاحب قاسمی، جناب مولانا سرفراز صاحب قاسمی، جناب مفتی عبداللہ صاحب قاسمی، جناب مولانا انصار صاحب قاسمی، جناب مولانا قاسم صاحب نیموہاں، جناب مکھیا نصیرالدین صاحب جہازقطعہ، مولانا مسعود صاحب جہازقطعہ، مولانا عبدالرحمٰن صاحب چپری، مولانا ہاشم صاحب نرینی وغیرہ نے شرکت کی۔ آٹھ بجے رات میں حضرت کی دعا پر پروگرام بحسن و خوبی اختتام پذیر ہوا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: