مضامین

جمعیت علمائے دیوگھر کی اصلاح معاشرہ کانفرنس کے لیے میٹنگ قسط نمبر 17

ماسٹر محمد شمس الضحیٰ کھٹنوی سابق صدر جمعیت علمائے سنتھال پرگنہ

13 / جولائی 1993ء بروز منگل شام مسجد کھروا میں زیر صدارت جناب ماسٹر محمد شمس الضحیٰ صاحب کھٹنوئی ایک میٹنگ ہوئی، جس میں 26/ جون سنیچر کی شام کو منعقدمسجد روپنی کی خصوصی میٹنگ کی تجویز کے مطابق اصلاح معاشرہ کانفرنس کو کامیاب بنانے کے لیے مجلس استقبالیہ تشکیل دی گئی۔ اس میں بالخصوص فدائے ملتؒ کاپروگرام طے کیا گیا۔ مجلس استقبالیہ کے لیے چنے گئے افراد کی تفصیلات درج ذیل ہیں:
۱۔ صدر جناب ماسٹر محمد شمس الضحیٰ صاحب کھٹنوی
۲۔ سکریٹری مولوی محمد الیاس روپنی(ناظم اعلیٰ جمعیۃ علماء دیوگھر)
۳۔ نائب سکریٹری مولانا محمد ریاست علی اوپر بہیاری
۴۔ نائب صدر محمد طاہر بلتھر
۵۔ خازن ماسٹر محمد فاروق کھروا
اراکین استقبالیہ: موضع کھروا۔ موضع بلتھر۔ محلہ بھورا دمگی۔ موضع روپنی کے ذمہ دار حضرات۔
بعد ازاں اگلے دن بتاریخ 14/ جولائی1993ء بدھ کی رات کو محمد ہاشم مرحوم بلتھر کے مکان پر ایک اہم نشست ہوئی، جس میں کافی تعداد میں لوگ شریک ہوئے اور کانفرنس کی کامیابی کے لائحہ عمل پر غورو خوض کیا گیا۔
جمعیت علمائے دیوگھر کا انتخابی جلسہ اور محکمہ شرعیہ کا قیام
14/ جون1994ء بروز جمعرات بعد نماز عصر روپنی مدرسہ میں جمعیت علمائے دیوگھر کا انتخابی اجلاس ہوا، جس کا آغاز روایتی طر زپر جمعیت علمائے ہند کی پرچم کشائی سے ہوا۔ پرچم کشائی کے بعد جھنڈا کی تاریخ پر گفتگو کی گئی اور دعا کرائی گئی۔ بعد نماز مغرب قاری محمد مقصود عالم کی تلاوت سے دوسری نشست کا آغاز ہوا۔ جس میں سب سے پہلے تجویز تعزیت کے تحت وفات پانے والوں؛ بالخصوص حاجی محمد ایوب صاحب چلمل مجاز شیخ الاسلامؒ کے لیے دعائے مغفرت اور ایصال ثواب کیا گیا۔ دیگر وفات پانے والوں میں موضع روپنی سے عبدالقیوم، محمد قاسم، محمد جلال الدین، عبدالجلیل، والدہ محمد انیس الدین، والدہ عبدالرحیم، والدہ محمد منہاج۔ اور موضع کھروا سے محمد پیغام علی منڈر، محمد مسلم منڈر، محمد یعقوب، محمد معین الدین، عبد الجلیل، اہلیہ محمد جمیل، والدہ عبدالکریم محمد مقبول میاں، عبدالکریم میاں، والدہ محمد ریاض۔ اور موضع بلتھر سے ابوبکر، اہلیہ ابوبکر، محمد انیس الدین، اہلیہ انیس الدین، عبدالرشید، جمیل احمد، اہلیہ محمد طاہر صاحبان کے نام شامل ہیں، جن کے لیے دعائے مغفرت کی گئی۔
تجویز (۲) چند مخلص حضرات کی کمیٹی تشکیل کی گئی، جنھوں نے آپسی مشورہ سے حسب ذیل عہدیداروں اور ذمہ داروں کا اعلان کیا۔ حاضرین نے اس کی تائید کی۔
۱۔ صدر مولانا محمد بدرالدین قاسمی
۲۔ ناظم اعلیٰ مولوی محمد الیاس روپنی
۳۔ خازن مولانا محمد اسلام قاسمی مورنئے
۴۔ نائب صدر مولانا محمد ریاست علی اوپر بہیاری
۵۔نائب صدر مولانا محمد رستم علی مدرسہ نواڈیہہ سرسرا
۶۔ نائب ناظم مولوی محمد ضمیر الدین باگھماری
۷۔ نائب صدر محمد ہارون الرشید کھروا
۸۔ مولانا محمد سلیم الدین مظاہری گھگھرجوری۔ ۹۔ حاجی محمد ارشاد علی مصرا ڈیہہ۔10۔ مولوی محمد اسماعیل کفسہ۔11۔ مولوی محمد عباس دیوگھر۔ نمبر ایک تا ۶ ریاستی جمعیت کے نمائندے اور نمبر ۱۱ تک عاملہ کے رکن بنائے گئے۔ اور اسی کے ساتھ دوسری نشست اختتام پذیر ہوئی۔
بعد نماز عشا کھانے سے فراغت کے بعد تیسری عام نشست کا آغاز ہوا۔ پہلے روپنی مدرسہ کے طلبہ کا پروگرام ہوا۔ بعد ازاں باضابطہ پروگرام میں مولانا یار محمد شمسی سنہولا، مولانا محمد ریاست علی اوپر بہیاری، مولانا محمد اسلام قاسمی مورنئے، مولانا عبدالجبار قاسمی مدرس روپنی اور ماسٹر محمد شمس الضحیٰ کھٹنئی صاحبان کے جامع خطابات ہوئے۔ صبح چار بجے دعا ہوئی۔
اگلے دن 15/ جون1994ء بروزجمعہ علیٰ الصباح چوتھی نشست ہوئی۔ یہ مجلس عاملہ کی نشست تھی، جس میں محکمہ شرعیہ کے لیے اراکین کا انتخاب کیا گیااور یہ فیصلہ کیا گیا کہ تعلیمی بورڈ کے قیام کے سلسلہ میں اگلی نشست میں غور کیا جائے گا۔ اسی طرح مدنی مسافر خانہ پٹنہ کے تعمیری منصوبہ اور دیگر تعمیری پروگراموں میں حصہ لینے کی ترغیب دلائی گئی۔ اراکین محکمہ شرعیہ ضلع دیوگھر کی تفصیل درج ذیل ہے:
۱۔ صدر مولانا عبدالجبار قاسمی مدرسہ سلطان المدارس روپنی
۲۔ ناظم دفتر مفتی محمد قمر الزماں قاسمی مدرسہ دارالعلوم مورنئے
۳۔ رکن مولانا عبدالوہاب مدرسہ اوپر بہیاری
۴۔ رکن مولانا محمد رستم علی مدرسہ اعزازالعلوم نوا ڈیہہ سرسرا
۵۔ رکن مولانا محمد جمشید علی مدرسہ معین الاسلام پپرا
۶۔ رکن مولانا محمد سلیم الدین گھگھرجوری
۷۔ رکن مولوی عبد الرحمان ایڈوکیٹ
فی الحال محکمہ شرعیہ کا دفتر مدرسہ دارالعلوم مورنئے میں رہے گا۔ علاقہ کے ضرورت مندوں کو معاملات کے حل کے لیے ترغیب دلائی جائے۔ اسے باضابطہ چلانے کے لیے اس کا مستقل نظم کیا جائے۔
اجلاس مجلس عاملہ جمعیت علمائے دیوگھر
14/ اکتوبر1994ء بعد نماز جمعہ جامع مسجد دیوگھر میں زیر صدارت مولانا محمد ریاست علی صاحب مجلس عاملہ کی نشست ہوئی۔ ابتدائی کارروائی کے بعد تجاویز منظور ہوئیں۔ حادثات میں ضرورت مندوں کی امداد، تعلیمی وظائف جاری کرنے کی کوشش، گاوں میں مسجد تعمیر کا منصوبہ وغیرہ جیسے مسائل زیر بحث آئے۔ اصلاح معاشرہ کمیٹی کے لیے دیوگھر اور موہن پور بلاک کے کنوینر مولانا حافظ محمد اسلام الدین مدرسہ مورنئے اور سارواں بلاک کے کنوینر ماسٹر محمد خلیل اوپر بہیاری بنائے گئے۔اور یہ طے کیا گیا کہ اصلاح معاشرہ کے سلسلہ میں صلاح و مشورہ کرنے کے لیے ایک پروگرام ماہ نومبر میں جامع مسجد دیوگھر میں رکھا جائے۔ اور اس کے اخراجات کے لیے ہر ہر حلقے سے پانچ پانچ سو روپیے وصول کیے جائیں۔ اور مختلف علاقوں کے لیے درج ذیل افراد ذمہ دار بنائے گئے:
روپنی علاقہ کے ذمہ دار محمد لقمان بلتھر۔ مورنئے علاقہ کے ذمہ دار مولانا محمد اسلام قاسمی، علاقہ اوپر بہیاری کے ذمہ دار مولانا محمد ریاست علی، نواڈیہہ سرسرا کے ذمہ دار مولانا محمد رستم علی اور نانی ڈیہہ مرکٹہ کے ذمہ دار محمد خلیل بسمتہ اور محمد بشیر نانی ڈیہہ مقرر کیے گئے۔
محکمہ شرعیہ کے استحکام کے لیے مرکز سے فارم وغیرہ طلب کر نے اور آئندہ دو عالموں کے انتخاب کا بھی فیصلہ لیا گیا۔
اراکین محکمہ شرعیہ ضلع دیوگھر کا جدید انتخاب
14/ جون1996ء کو ایک میٹنگ رکھی گئی، لیکن کورم پورا نہ ہونے کی وجہ سے ملتوی کردی گئی۔ بعد ازاں 20/ دسمبر1996ء بعد نماز جمعہ مسجد مرکٹہ نانی ڈیہہ تھانہ سونا رائے ٹھاڑی میں مجلس عاملہ کی اہم نشست ہوئی۔ اس کی صدارت مولانا محمد سلیمان نے کی۔ مدعوئین خصوصی بھی کافی تعداد میں شریک تھے۔ تلاوت اور ایصال ثواب کی رسمی کارروائی کے بعدمحکمہ شرعیہ کے اراکین کا جدید انتخاب عمل میں آیا، جس کی تفصیل پیش ہے:
(۱) صدر مفتی محمد شمیم احمد قاسمی ہیڈ نواڈیہہ (مرکٹہ نانی ڈیہہ)
(۲) رکن مولانا عبدالجبار قاسمی مدرسہ روپنی
(۳) رکن مولانا محمد جمشید علی مدرسہ معین الاسلام پپرا
(۴) رکن مولانا محمد اسلام قاسمی دارالعلوم مورنئے
(۵) رکن مولانا عبدالرزاق قاسمی مدرسہ مدھو پور
(۶) رکن عبدالرحمان ایڈوکیٹ نوکھیتہ سارواں
(۷) ناظم دفتر مولانا محمد رستم علی مدرسہ نوا ڈیہہ سرسرا
انتخابی اجلاس جمعیت علمائے دیوگھر
3/ نومبر2001ء بروز سنیچر بعد نماز مغرب، روپنی کی مسجد میں زیر صدارت حاجی محمد طاہر حسین روپنی اور زیرنگرانی ضلع جمعیۃ دیوگھر کا انتخابی اجلاس ہوا۔ تلاوت اور ابتدائی کارروائی کے بعد درج ذیل عہدیداروں کا انتخاب کیا گیا:
۱۔ صدر مولانا محمد بدر الدین قاسمی
۲۔ ناظم اعلیٰ مولوی محمد الیاس روپنی
۳۔ خازن محمد خلیل بسمتہ
۴۔ نائب صدر مولوی محمد ضمیر الدین باگھماری
۵۔ نائب صدر مولوی محمد معین الدین مدرسہ پپرا
۶۔ نائب ناظم محمد ہارون رشید کھروا
۷۔ نائب ناظم ماسٹر محمد مسلم مورنئے
جناب ماسٹر محمد شمس الضحیٰ نے اختتام مجلس پر خطاب کرتے ہوئے بتایاکہ 10/ نومبر2001 ء کو مدنی مسافر خانہ پٹنہ میں ریاستی انتخاب کے ساتھ اجلاس عام بھی ہورہا ہے، اس لیے اس میں شرکت کی کوشش کرنی چاہیے۔ رات ساڑھے نو بجے انھیں کی دعا پر مجلس اختتام پذیر ہوئی۔
جمعیت علمائے دیوگھر جھارکھنڈ کا انتخابی جلسہ
15/ جون2004ء بروز منگل صبح ۸/ بجے مدرسہ روپنی میں زیر صدارت الحاج مولانا عبدالجبار قاسمی صاحب ایک انتخابی اجلاس ہوا، جس میں رسمی کارروائی کے بعد درج ذیل افراد کو ضلع جمعیۃ علماء دیوگھر کا ذمہ دار بنایا گیا:
۱۔ صدر مولوی محمد الیاس روپنی جمونیاں دہی جور
۲۔ ناظم اعلیٰ مولانا الحاج عبدالجبار قاسمی مدرسہ روپنی
۳۔ خازن محمد نسیم کھروا
۴۔ نائب صدر مولوی محمد معین علی مدرسہ پپرا ڈومریاسارٹھ
۵۔ نائب صدر حاجی محمد یوسف نواڈیہہ سارواں
۶۔ نائب ناظم ماسٹر محمد مسلم مورنئے گھوڑمارا
۷۔ نائب ناظم مولانا محمد توحید چھوٹی مسجد دیوگھر شہر دیوگھر
۸۔ رکن مولانا محمد عمران مظاہری موتی پور گنگٹی جسی ڈیہہ
۹۔ رکن محمد اسلم حسین بلتھر جمونیاں موہن پور
10۔ رکن محمد حبیب بسمتہ نانی ڈیہہ سارواں
11۔ رکن محمد خلیل اوپر بہیاری رکتی سارواں
12۔ رکن مولوی محمد اسماعیل کفسہ گوپی باندھ سارٹھ
13۔ رکن مولوی محمد ضمیر الدین باگھماری منی گڑھی سارواں
اس میں ایک تا ۸/ اور محمد لقمان بلتھر ریاستی جمعیۃ علماء جھارکھنڈ کے لیے اراکین منتخب کیے گئے۔ بقیہ سبھی حضرات مجلس عاملہ کے رکن رہے۔ ۱۱/ بجے دن دعا کے ساتھ مجلس کا اختتام ہوا۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: