مضامین

جہاز قطعہ میں اجلاس عام قسط نمبر 12

ماسٹر محمد شمس الضحیٰ کھٹنوی سابق صدر جمعیت علمائے سنتھال پرگنہ

مجلس عاملہ و مجلس منتظمہ کا اجلاس
مورخہ17/ مئی1981ء بروز اتوار بوقت ۴/ بجے شام زیر صدارت جناب ماسٹر محمد شمس الضحیٰ صاحب صدر جمعیت علمائے ضلع سنتھال پرگنہ، بمقام مسجد و مدرسہ اسلامیہ جہاز قطعہ مجلس عاملہ و مجلس منتظمہ کا مشترکہ اجلاس ہوا۔ قاری زین العابدین صاحب کی تلاوت کے بعد وفات پانے والوں بالخصوص بہار شریف میں شہید ہونے والوں کے لیے ایصال ثواب اور دعائے مغفرت کی گئی۔ گذشتہ کارروائی کی پیشی کے بعد توثیق کی گئی اور درج ذیل تجاویز کو منظوری ملی:
(1) حکومت بہار نے اردو زبان کو ثانوی زبان قرار دے کر مستحسن اقدام کیا ہے، اس کے لیے حکومت بہار خصوصا وزیر اعلیٰ موصوف قابل مبارک باد ہیں۔ دوسری ریاستوں کو بھی اس کی تقلید کرتے ہوئے عمدہ نمونہ پیش کرنا چاہیے۔ اردوزبان ہندستانی تہذیب کی مشترکہ زبان ہے۔ اس کی نشو ونما دوسری زبانوں کے لیے بھی ممد و معاون ثابت ہوگی۔
(2) اندازہ ہوتا ہے کہ کچھ تخریبی عناصر ملک میں منصوبہ بند طریقے پر فساد و ہنگامہ آرائی کی صورتیں پیدا کرکے ملک کی جمہوریت کے لیے بد نما داغ اور ملک کی تعمیر وترقی میں حائل ہوتے رہتے ہیں۔ انسداد فسادات اور مکمل امن و امان کے لیے جمعیت علمائے ہند کی تجاویز پر عمل آوری ضروری ہے تاکہ ملک اور نظام جمہوریت کا وقار قائم رہ سکے۔گذشتہ سال جمشید پور اور حالیہ واقعہ بہار شریف عبرت کے لیے کافی ہے۔ حکومت کی پوری مشنری کو مستعد اور چوکس رہنا چاہیے تاکہ ناخوشگوار حالات ہی نہ آنے پائے۔
(3) حکومت بہار نے ملحقہ مدارس کو اپنی تحویل میں لے کر مالی استعانت پہنچائی؛ مگر حالیہ آرڈیننس کے غلط اثرات مدرسوں پر پڑیں گے، جو سیکولر و جمہوریت بالخصوص بنیادی حقوق کے منافی ہے۔ قیام مدرسہ کا مقصد بحال رہے۔ حکومت کو نظر ثانی کرنے کی ضرورت ہے۔
(4) شرعی پنچایت کی اہمیت کے پیش نظر قاری حافظ محمد زین العابدین صاحب مدرسہ یتیم خانہ دودھانی دمکا سے گذارش کی جاتی ہے کہ وہ خود ناظم دفتر کی حیثیت سے خدمت انجام دینے کی تکلیف فرمائیں۔ضلع میں پرچار کرکے لوگوں کو واقف کرانے کی ضرورت ہے تاکہ اپنے معاملات کا حل یا فیصلہ کراسکیں۔ سابقہ اراکین کے علاوہ مولانا محمد منیر الدین قاسمی مدرس مدرسہ یتیم خانہ دودھانی بھی رکن کی حیثیت سے منتخب کیے گئے۔
(5) تنظیم جمعیۃ کی توسیع کے سلسلہ میں 11/ جون1965ء کی تجویز نمبر16 کے مطابق تاکید کے طور پر یہ تجویز منظور کی گئی کہ سہولت کے لحاظ سے تھانہ وار تنظیم قائم کرکے کاموں کو آگے بڑھایا جائے۔
(6) آئندہ سال (1982ء) میں جمعیت کے پلیٹ فارم سے تنظیمی، اصلاحی اور مالیاتی دورے کے لیے حسب ذیل افراد نے اپنا قیمتی وقت دینے کا وعدہ کیا اور یہ طے کیا گیا کہ صدر و ناظم اعلیٰ صاحبان سہولت و ضرورت کے لحاظ سے وفود کی ترتیب دیں گے اور انھیں مختلف حلقوں میں روانہ کریں گے۔
۱۔ مولانا محمد مظہر الحق جہاز قطعہ، پچاس روز حسب سہولت۔ ۲۔ مولانا محمد عرفان مظاہری جہاز قطعہ چالیس روز حسب سہولت۔ ۳۔ مولوی محمد حبیب الرحمان جہاز قطعہ پندرہ روز اپریل میں۔ ۴۔ مولوی محمد سخاوت حسین سات روز حسب سہولت۔ ۵۔ ڈاکٹر محمد ثمیر الدین سات روز اپریل و مئی میں۔ ۶۔ مولانا عبدالقدوس جہاز قطعہ سات روز حسب ضرورت۔ ۷۔ مولوی محمد سراج الدین سات روز ہولی تعطیل میں۔ ۸۔ مولانا محمد شمس الحق تین روز ہولی تعطیل میں۔ ۹۔ مولانا منصور احمد قاسمی بیلسر سات روز اخیر اپریل۔10۔ حاجی محمد حمید الدین کھٹنئی سات روز حسب ضرورت۔ 11۔ مولوی محمد مسلم سات روز گرمی تعطیل میں۔12۔ حافظ محمد منیر الدین سات روز حسب سہولت۔13۔ حاجی محمد ظہور الحق دس روز۔14۔ مولانا محمد حدیث دس روز۔15۔ قاری محمد زین العابدین دودھانی دمکا دس روز ضرورت پر۔16۔ حافظ منصور احمد گوپی چک سات روز۔ 17۔ مولوی محمد الیاس روپنی دیوگھر سات روز۔18۔ حکیم محمد ذکی الدین لیتھا سات روز۔19۔ مولانا محمد ابراہیم پربتہ سات روز۔20۔ مولوی محمد مبارک کریم لوگائیں پندرہ روز۔ 21۔ مولوی عبدالحفیظ بکوا چک تین روز ہولی تعطیل۔ 22۔ مولانا محمد بشیر الدین مظاہری پنڈرہ سات روز۔23۔ مولانا محمد بدر الدین قاسمی نوا ڈیہہ سرسرا پندرہ روز۔24۔ مولوی صغیر احمد مورنئے چار روز۔
(7) ضلع جمعیت کے عہدیداران اور ریاستی جمعیت کے نمائندگان کا انتخاب متفقہ طور سے ہوا، جس کی تفصیل پیش ہے:
1۔ صدر جناب ماسٹر محمد شمس الضحیٰ صاحب کھٹنئی
۲۔ناظم اعلیٰ مولانا منصور احمد قاسمی بیلسر
۳۔نائب صدر مولانا محمد بدر الدین قاسمی نوا ڈیہہ سرسرا مدرسہ اعزازالعلوم
۴۔ نائب صدر مولانا عبدالرزاق قاسمی مدرسہ اسلامیہ مدھو پور
۵۔ نائب صدر مولانا محمد مظہر الحق قاسمی جہاز قطعہ
۶۔نائب ناظم مولانا محمد عرفان مظاہری جہاز قطعہ
۷۔ نائب ناظم مولانا محمد شمس الحق صدیقی جہاز قطعہ
۸۔ خازن الحاج مولوی محمد ظہور الحق کھٹنئی
۹۔ ناظم دفتر و نشرو اشاعت قاری محمد منیر الدین مال پکڑیا
درج بالا میں سے درج ذیل چھ افراد ریاستی نمائندہ منتخب کیے گئے:
(۱)جناب ماسٹر محمد شمس الضحیٰ صاحب کھٹنئی۔ (۲) مولانا منصور احمد قاسمی بیلسر۔ (۳) الحاج مولوی محمد ظہور الحق کھٹنئی۔ (۴) مولانا محمد بدر الدین قاسمی نوا ڈیہہ۔ (۵) مولانا عبدالرزاق قاسمی۔ (۶) مولانا محمد مظہر الحق قاسمی جہاز قطعہ۔
درج ذیل پانچ افراد مجلس عاملہ کے لیے نامزد کیے گئے:
(۱) الحاج مولوی محمد حمید الدین کھٹنئی۔ (۲) مولوی محمد ارشاد علی مصرا ڈیہہ سارواں۔ (۳) قاری محمد زین العابدین دودھانی دمکا۔ (۴) مولانا محمد عرفان مظاہری جہاز قطعہ۔ (۵) مولوی محمد قمر الزماں ایڈوکیٹ پاکوڑ۔
جہاز قطعہ میں اجلاس عام
مورخہ 17/ مئی 1981ء بروز اتوار بوقت۹/ بجے شب جہاز قطعہ میں شروع ہوا۔ مدرسہ اسلامیہ رحمانیہ جہاز قطعہ کے طلبہ نے تلاوت، نعت تقاریر اور مکالمے پیش کیے۔ اس کے بعد خطبہ استقبالیہ پڑھا گیا۔ بعد ازاں ماسٹر محمد شمس الضحیٰ کھٹنئی،ماسٹر عبدالحفیظ بکوا چک، مولانا غلام رسول کدمہ، مولانا منصور احمد قاسمی بیلسر، مولانا محمد عرفان مظاہری جہاز قطعہ اور مولانا مظہر الحق قاسمی جہاز قطعہ نے تقریریں کیں۔ اور تجاویز پیش کی گئیں۔ اجلاس کے اختتام پر قاری حافظ محمد مسعود ابن مولانا حافظ قاری محمد قطب الدین صاحب کا عقد نکاح پونے نو سو روپیے دین پر بی بی عائشہ خاتون بنت محمد معین الدین جہازقطعہ کے ساتھ مسنون طریقے پر ہوا۔ ساڑھے چار بجے صبح دعا ہوئی۔

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: