اہم خبریں

خواجہ صاحب کی زندگی مشعل راہ: مولانا محمود مدنی

اجمیر میں عرس کے موقع پر جمعیۃ علماء ہند کے جنرل سکریٹری پر مولانا محمود مدنی کا خطاب۔جمعیۃ کے زیر اہتمام زائرین کے لیے میڈیکل کا افتتاح۔مولانا مدنی نے کہا کہ سلطان الہند نے اپنا میدان عمل دہلی کی مسلم سلطنت کو نہیں بلکہ پرتھوی راج کے’اجمیر‘کو بنایا اورمصائب کا پہاڑ اوڑھ کر بھی حسن اخلاق کے ذریعہ لاکھوں دلوں کو منور کیا۔

اجمیر شریف /نئی دہلی:14/فروری
آج یہاں خواجہ کی نگری اجمیر شریف میں جمعیۃ علماء ہند کے جنرل سکریٹری مولانا محمود مدنی اور درگاہ شریف کے ذمہ داروں کے ہاتھوں جمعیۃ میڈیکل کیمپ کا افتتاح عمل میں آیا جو سالانہ عرس کے دوران زائرین کے لیے طبی خدمات فراہم کرے گا۔ اس سلسلے میں کائیڈ وشرام استھلی میں ایک افتتاحی تقریب منعقد ہوئی جس میں ڈاکٹر عادل، عبدالواحد انگارہ چشتی سمیت درگاہ سے وابستہ کئی اہم شخصیات موجود تھیں۔

اس موقع پر اپنے خصوصی خطاب میں مولانا محمود مدنی نے کہا کہ سلطان الہند خواجہ خواجگان و سلسلہ عالیہ چشتیہ کے امام حضرت معین الدین چشتی اجمیریؒ نے رسول پاک صلی اللہ علیہ وسلم کی سیرت طیبہ پر عمل پیرا ہوتے ہوئے بلاتفریق مذہب، تمام انسانوں کی خدمت کی اور اپنا میدانِ عمل دہلی کی مسلم سلطنت کو نہیں بلکہ پرتھوی راج چوہان کے’اجمیر‘کو بنایا اور مصائب کا پہاڑ اوڑھ کر بھی اپنے اعلی اخلاق و کردار سے لاکھوں انسانوں کو سچائی کی دولت سے مالا مال کیا۔یہی وجہ ہے کہ آج آٹھ سو نو سال گزر جانے کے باوجود بھی ان کا نام آفتا ب سے زیادہ روشن ہے۔مولانا مدنی نے کہا کہ خواجہ صاحب کی سرزمین پر جمعیۃ علماء کے خدام کو خدمت کا موقع ملا ہے جہاں لگاتار پانچ سالوں سے ریاستی جمعیۃ کے ذمہ داران ہر عرس کے موقع پر زائرین کی طبی خدمت انجام دیتے ہیں۔

مولانا مدنی نے کہا کہ خواجہ صاحب کی زندگی ہمیں یہ تعلیم دیتی ہے کہ اچھے القاب اور جاہ وحشمت سے کوئی بلند نہیں ہوتا بلکہ جہد مسلسل سے دنیا اور آخرت میں سرخروئی ملتی ہے۔انھوں نے کہا جمعیۃ علماء کسی خاص طبقے کی نمایندگی نہیں کرتی بلکہ یہ ملت کی نمایندگی کرتی ہے اورجب وہ بات کرتی ہے تو اس کے سامنے ملت اسلامیہ کا مفاد ہو تا ہے۔مولانا مدنی نے کہا کہ آج کے مشکل کے وقت میں بے فکری سے کام چلنے والا نہیں ہے۔ مولانا مدنی نے کہا کہ اولاد کی تربیت پر ہماری توجہ اتنی ہے کہ اگر اسکی شادی کرنی ہو تو بے انتہا خرچ کریں گے، لیکن تربیت کا معاملہ ہو تو جتنی توجہ پالتو بکری کی دیکھ ریکھ پر ہوتی ہے، اتنی بھی اولاد کی تربیت پر نہیں کرتے۔انھوں نے کہا کہ باہر کا بدلاؤ اتنا ضروری نہیں ہے جتنا اندر کا ضروری ہے۔زمانہ آج ہماری طرف دیکھ رہا ہے کہ ہے کوئی مصیبت زدہ کی مدد کرنے والا، مظلوموں اور پریشان حال لوگوں کو سیدھا راستہ دکھلانے والااور نفرت کا جواب محبت دے کر دلوں کو فتح کرنے والا۔اس لیے ضرور ی ہے کہ خواجہ صاحب کی زندگی سے نصیحت حاصل کرکے ہمیں ٹوٹے دلوں کو جوڑنا ہے۔
اس موقع پر درگا اجمیر شریف کے نائب ناظم ڈاکٹر عادل نے عرس کے موقع پر جمعیۃ علماء ہند کی خدمات کی ستائش کی اور کہا کہ جس طرح جمعیۃ علماء کے خدام نے گزشتہ سال کئی لاشوں کو ایمبولینس کے ذریعہ ان کے وطن تک پہنچایا،وہ ایک ایسا کام ہے جو عرس کی بھیڑ کے موقع پر کوئی سوچ بھی نہیں سکتا۔ان کے علاوہ درگاہ اجمیر شریف کے ناظم اشفاق حسین، عبدالواحد انگارہ صاحب چشتی، مولانا حکیم الدین قاسمی سکریٹری جمعیۃ علاء ہند نے بھی خطاب کیا، جمعیۃ علماء راجستھان صدر قاری محمد امین نے پروگرام کی صدارت کی اور پروگرام کی نظامت مولانا شبیر احمد قاسمی نائب صدر جمعیۃ علماء راجستھان نے انجام دی، درگاہ اجمیر شریف کے دیگر ذمہ داران آل بدر چشتی، مصور علی چشتی،محمود حسین پارسد، جمعیۃ علماء ہند کے آرگنائزر مولانا علیم الدین اجمیری، مولانا ابوالحسن پالن پوری، جمعیۃ علماء گجرات کے سکریٹری عتیق الرحمن قریشی،مولانا حفظ الرحمن تھور پالن پور، مولانا محمد یونس سیکر، مولانا محمد ایوب،مولانا رمضان جودھور سمیت راجستھان کے الگ الگ اضلاع سے جمعیۃ کے ذمہ داران بھی اس تقریب میں شریک ہوئے۔ اس تقریب کے بعد مولانا مدنی نے دہلی گیٹ اجمیر شریف پر ایک کلینک کا افتتاح کیا جو درگا ہ شریف سے قریب واقع ہے۔۔۔۔۔۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: