اہم خبریں

رانچی میں اہانت رسول کے خلاف مظاہرہ کے دوران شہید ہونے والوں کے خاندان کو جمعیۃ علماء ہند کی طرف سے ایک ایک لاکھ روپے کی مالی امداد

نئی دہلی :۱۷؍ جون ۲۰۲۲ء : رانچی میں توہین رسالت کے خلاف ہوئے مظاہرے پر پولس بربریت میں شہید ہونے والے ہند پیڑھی کے محمد مدثر اور گدڑی چوک کے محمد ساحل کے اہل خانہ انتہائی غم و صدمے میں ہیں ۔گزشتہ ہفتے جمعیۃ علماء ہند کے جنرل سکریٹری مولانا حکیم الدین قاسمی کی قیادت میں جمعیۃ کے ایک وفد نے ان دونوں کے اہل خانہ سے ملاقات کی تھی، یہ دونوں خاندان کافی غریب ہیں۔اس درمیان مختلف ویڈیوز کے ذریعہ ۱۶؍سالہ محمد مدثر کی والد ہ کے دل سوز بیانات نے پورے ملک کو متاثر کیا ہے ،مدثر ان کا تنہا لڑکاتھا۔
ان حالات میں صدر جمعیۃ علماء ہند مولانا محمود اسعد مدنی نے جہاں ایک طرف جھارکھنڈ کے وزیر اعلی سے مطالبہ کیا ہے کہ مظاہرے پر گولی چلانے والوں کی شناخت کرکے ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے ، نیز متوفی کے اہل خانہ کو معقول معاوضہ دیا جائے ، وہیں دوسری طرف مولانا مدنی نے انسانی ہمدردی کے مدنظر جمعیۃ کی طرف سے اہل خانہ کو ایک ایک لاکھ روپے دینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ چنانچہ ان کے فیصلے پر عمل کرتے ہوئے جمعیۃ علماء ہند کے دفتر سے ان دونوں شہیدوں کے اہل خانہ کو مبلغ دو لاکھ روپے بذریعہ اکائونٹ ٹرانسفر کردیے گئے ۔
ساتھ ہی صدر جمعیۃ علماء ہند نے یہ امید ظاہرکی ہے کہ وزیر اعلی نے جو کمیٹی تشکیل دی ہے ، وہ منصفانہ طور سے انکوائری کرکے جلد رپورٹ داخل کرے گی تا کہ خاطیوں کو سزا دی جاسکے ۔اس کے علاوہ صدر جمعیۃ علماء جھارکھنڈ مولانا اسرارا لحق مظاہری، ناظم اعلیٰ مولانا ڈاکٹر اصغر مصباحی،مولانا محمد قاسمی مہتمم مدرسہ حسینیہ کڈرورانچی ،مفتی قمرعالم ، قاری اسجد ، اقبال امام ، تنویر احمد، شا ہ عمیر وغیرہ وہاں کے حالات کا مسلسل ادراک کررہے ہیں اور اس کے مطابق ضرورت مندوں کو قانونی امداد بھی فراہم کی جائے گی ۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
Close
%d bloggers like this: