اسلامیات

رمضان المبارک کو کیسےقیمتی بنائیں

عبیدالرحمن ایوبی کیرانوی متعلم دارالعلوم ندوۃ العلماء،لکھنؤ

رمضان کے مبارک مہینہ کو کیسے قیمتی بنایا جائے؟اس میں کون سے اعمال اختیار کئے جائیں؟ یہ ایک ایسا سوال ہے جو ہر رمضان کی آمد کے ساتھ ہر مسلمان مرد وعورت کے ذہن میں اٹھتا ہے، بہت اہم ،انتہائی قیمتی اور اہمیت کا حامل سوال ہے۔۔ رمضان کے مہینہ کو قیمتی بنانے کے لئے جہاں اس کے روزوں اور ذکر وتلاوت کا اہتمام اور فواحش ومنکرات سے اجتناب ضروری ہے وہیں اور دوسرے بہت سارے اعمال بھی اختیار کرنے چاہیے جن کے ذریعہ مزید اس مبارک مہینہ کی رحمتوں اور نوازشات سے مستفید ہوا جا سکتا ہے، ذیل کی سطور میں انہیں چند امور کو تحریر کیا گیا ہے۔۔۔

افطار کروانا :- اس مبارک مہینہ میں ہر مسلمان حسب استطاعت روزہ داروں کو افطار کرواکر دوہرا اجر حاصل کر سکتا ہے۔۔ چنانچہ حضرت زید بن خالد رضی اللہ عنہ حضور اقدس صلی اللہ علیہ وسلم سے نقل کیا ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : جس نے کسی روزہ دار کو افطار کروایا اس کو روزہ دار کے مثل اجر ملے گا اور روزہ دار کے ثواب میں کوئی کمی نہیں کی جائے گی۔۔

خیر کے کاموں میں خرچ کرنا :- خیر کے کاموں میں خرچ کرنےکے ذریعہ سے جہاں ایک طرف نیکی کے کاموں میں تعاون اور مستحق لوگوں کی امداد ہوتی ہے تو دوسری طرف رمضان میں عام دنوں کے مقابلے میں کءی گنا زیادہ اجر حاصل ہوتا ہے۔۔۔

والدین کی اطاعت :- رمضان کو قیمتی بنانے کا ایک بہت ہی اہم وسیلہ اور ذریعہ والدین کی اطاعت و فرماں برداری ہے، کوشش کریں کہ اس مہینہ میں خاص طور سے والدین کے قریب رہیں اور ان کی خدمت کریں، ان کی ضروریات کاخیال رکھیں، ان کو ہر طرح کی راحت وسکون پہچانے کی فکر کریں۔

مسواک کا اہتمام :- مسواک کا اہتمام کریں،مسواک جیسے پورے سال میں سنت ہے بلکہ عام دنوں کے مقابلے میں اس کا اجر کءی گنا بڑھا دیا جاتا ہے۔۔

رمضان میں عمرہ کرنا :- رمضان میں عمرہ کرنا ایک بہت بڑا عمل، ثواب کے اعتبار سے اس کا اجر ایک حج کے برابر ہے، اس عمل میں لوگ افراط وتفریط جا شکار ہیں، اس لئے کوشش کریں کہ ائمہ مساجد اور علماء سے مشاورت کے بعد اس عمل کو انجام دیں۔۔

دعوت الی اللہ :- اس مہینہ میں دعوت الی اللہ کے عمل کو اہتمام وخصوصیت کے ساتھ انجام دیں اور لوگوں کو مساجد کی طرف متوجہ کریں۔۔۔

تلاوت قرآن كريم كى كثرت كريں :- بہر حال روزه تو ركهنا ہی ہے اور تراويح تو پڑھنی ہی ہے ، اس كى علاوه جتنا بھی وقت هو سکے عبادت مين صرف كرو . مثلا ثلاوت قرآن كريم كا خاص اهتمام كرو کیونکہ اس رمضان کے مہینہ كو اس سے خاص مناسب ہے اس لئے اس ماہ میں زياده سے زياده تلاوت كرو امام ابو حنیفہ رحمتہ اللہ علیہ رمضان المبارک میں روزانہ ایک قرآن کریم دن میں ختم کیا کرتے تھے اور ایک قرآن کریم رات میں ختم کیا کرتے تھے اور ایک قرآن کریم تراویح میں ختم فرمایا کرتے تھے اسی طرح پورے ماہ مبارک رمضان میں اکسٹھ قرآن کریم ختم فرمایا کرتے تھے ۔ علامہ شامی رحمتہ اللہ علیہ رمضان کے دن اور رات میں ایک قرآن مجید ختم کیا کرتے تھے ۔ بڑے بڑے بزرگوں کی معاملات میں قرآن مجید داخل رہی ہے ۔ لہذا ہم بھی رمضان المبارک میں عام دنوں کی مقدار کے مقابلے میں تلاوت کی مقدار کو زیادہ کریں

نوافل کی کثرت کریں :- دوسرے ایام میں جن نوافل کی پڑھنے کی توفیق نہیں ہوتی ، ان کو رمضان المبارک میں پڑھنے کی کوشش کریں ۔مثلا تہجد کی نماز عام دنوں میں پڑھنے توفیق نہیں ہوتی لیکن رمضان المبارک میں رات کے آخری حصے میں سحری کھانے کے لئے تو اٹھنا ہی ہوتا ہے، تھوڑی دیر پہلے اٹھ جائیں اور اسی وقت تہجد کی نماز پڑھ لیں ۔ اس کے علاوہ اشراق کی نوافل ،چاشت کی نوافل ، اوابین کی نوافل، عام ایام میں اگر نہیں پڑھی جاتیں تو کم از کم رمضان المبارک میں تو پڑھ لیں ۔

صدقات کی کثرت کریں:- رمضان المبارک میں زکوۃ کے علاوہ نفلی صدقات بھی زیادہ سے زیادہ دینے کی کوشش کریں، حدیث مبارکہ میں آتا ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی سخاوت ایسی ہوتی تھی جیسے چلتی ہوئی ہوائیں، جو آپ کے پاس آیا اس کو نواز دیا لہذا ہم بھی رمضان المبارک میں صدقات کی کثرت کریں ۔

ذکر اللہ کی کثرت کریں :- اس کے علاوہ چلتے پھرتے اٹھتے بیٹھتے اللہ کا ذکر کثرت سے کریں ۔ہاتھوں سے کام کرتے رہیں اور زبان پر اللہ کا ذکر رہے ، تسبیحات کا کثرت سے ذکر کریں اس کے علاوہ درود شریف اور استغفار کی کثرت کریں اور ان کے علاوہ جو بھی ذکر زبان پر آجائے بس چلتے پھرتے اٹھتے بیٹھتے اللہ کا ذکر کثرت سے کرتے رہیں ۔

گناہوں سے بچنے کا اہتمام کریں :- اور رمضان المبارک میں خاص طور سے گناہوں سے اجتناب کریں اور اس سے بچنے کی فکر کریں ۔ یہ طے کر لیں کہ رمضان المبارک کے مہینہ میں یہ آنکھ غلط جگہ پر نہیں اٹھے گی ۔ انشاء اللہ ۔ یہ طے کر لیں کہ رمضان المبارک میں اس زبان سے کوئی غلط بات نہیں نکلے گی۔انشاء اللہ ۔ جھوٹ، غیبت کا کوئی کلمہ زبان سے نہیں نکلے گا ۔ رمضان المبارک کے مہینہ میں اس زبان پر تالا ڈال لو، یہ کیا بات ہوئی کہ روزہ رکھ کر حلال چیزوں کے کھانے سے تو پرہیز کر لیا لیکن رمضان المبارک میں مردہ بھائی کا گوشت کھا رہے ہو ۔ اسلیئے کہ غیبت کرنے کو قرآن مجید نے مردہ بھائی کا گوشت کھانے کے برابر قرار دیا ہے لہذا غیبت سے بچنے کا اہتمام کریں ۔جھوٹ سے پرہیز کریں اور فضول کاموں سے، فضول مجلسوں سے اور فضول باتوں سے بچنے کا اہتمام کریں اور اس طرح سے یہ رمضان کا مہینہ گزارا جائے ۔

دعا کی کثرت کریں :- اس کے علاوہ اس ماہ مبارک میں اللہ تعالی کے حضور دعا کی خوب کثرت کریں ۔رحمت کے دروازے کھلے ہوئے ہیں اور رحمت کی گھٹائیں برس رہی ہیں، مغفرت کے بہانے ڈھونڑے جا رہے ہیں، اللہ تعالی کی طرف سے آواز دی جا رہی ہے کہ ہے کوئی مجھسے مانگنے والا جس کی دعا میں قبول کروں لہذا صبح کا وقت ہو یا شام کا وقت ہو یا رات کا وقت ہو ہر وقت مانگو، خاص کر افطار کے وقت مانگو، رات کو مانگو ہم قبول کر لینگے، روزہ کی حالت میں مانگ لو ہم قبول کر لیں گے، آخر رات میں مانگ لو ہم قبول کر لیں گے اور اللہ تعالی نے اعلان فرما دیا ہے کہ ہر وقت تمہاری دعائیں قبول کرنے کے لئے دروازے کھلے ہوئے ہیں اس لیے خوب مانگو اور اللہ تعالی قبول فرمائیں گے ۔

تلاوت کلام اللہ :- قرآن کریم کی تلاوت کا اہتمام کریں، لیکن کوشش یہ رکھے کہ قرآن کریم کو صحیح اور درست پڑھیں، تلفظ اور ادائیگی میں فحش غلطیوں سے اجتناب کریں۔۔
اگر پہلے سے پڑھا ہوا نہیں تو کوشش اس بات کی کریں کہ اس مہینے میں قرآن کریم کے حوالے سے اتنی محنت کریں کہ قرآن پاک صحیح سے پڑھنا آجائے۔۔۔

نماز پنچ وقت کا اہتمام :- نماز پنچ وقت کا اہتمام کریں، باجماعت ادا کرنے کی کوشش کریں، عام طور سے مغرب میں افطار کی وجہ سےاور فجر میں نیند کے غلبہ کی وجہ سے جماعت کی نماز سے غفلت ہو جاتی ہے، یہ صحیح نہیں ہے بلکہ بہت بڑی محرومی کی بات ہے، فرائص باجماعت ادا کرنے کی کوشش کریں،سنس اور نوافل کا بھی خاص اہتمام رکھیں، چونکہ رمضان میں نفل کا ثواب فرائص کے بقدر کر دیا جاتا
ہے۔۔اس کے علاوہ اشراق،چاشت،تہجد کا بھی وقت مقرر کریں۔
وقت سحر اعمال کا اہتمام :- سحری کا وقت بہت ہی قیمتی وقت ہوتا ہے، اس وقت اللہ کی خاص رحمتوں اور برکتوں کا نزول ہوتا ہے، ایک تو سحری کھانے کا اہتمام ہو دوسرے اس بات کا بھی اہتمام کیا جائے کہ یہ وقت بڑا بابرکت اور مقبولیت کا وقت ہے۔۔۔

خواتین کو بھی اعمال صالحہ کا بھرپور موقع دیں :- خواتین رمضان کے مبارک گھڑیوں کو صرف کھانے پکانے میں صرف نہ کریں، اس میں کوئی شک نہیں کہ افطاری و سحری تیار کرنا باعث اجر و ثواب ہے، لیکن بقدر ضرورت وقت اس میں صرف کریں، اور اس کے علاوہ اوقات کو اعمال صالحہ میں صرف کریں اور ہماری خواتین گھریلو کام کاج کے ساتھ ذکر وتلاوت کے لۓ بھی اوقات فارغ کریں۔۔

فضول گھومنے پھرنے سے اجتناب :- رمضان المبارک میں بہت ساری خواتین وحضرات بازاروں میں گھوم پھر کر کپڑوں،جوتوں اور دیگر اشیاء کی خریداری کے عنوان سے اپنا قیمتی وقت ضائع کرتی ہیں، اعمال صالحہ سے محروم ہو جاتی ہیں،رمضان سے متعلق جتنی ضروریات ہیں وہ اس مہینہ کے شروع ہونے سے پہلے ہی خرید لیں اور باقی اگر رمضان میں کوئی ضرورت ہو تو بقدر ضرورت چیزیں خرید کر فورا گھر لوٹ آئیں، بازاروں اور شاپنگ مالوں میں فضول گھوم پھرنا اپنا قیمتی وقت ضائع اور برباد مت کریں۔۔

خواتین کی تراویح و اعتکاف :- خواتین اپنے گھروں میں فرض نمازوں کے ساتھ تراویح اور اعتکاف کا بھی اہتمام کریں، تراویح اور اعتکاف کا حکم جیسے مردوں کے لئے ایسے ہی خواتین کے لۓ بھی۔۔

بچوں کو نماز روزوں کا عادی بنائیں :- کوشش کریں کہ سات سال کے بچہ کو نماز اور روزہ کا عادی بنائیں، ان کی حوصلہ افزائی کریں، ہمت دلائیں تاکہ وہ بھی اس مہینہ کی برکات سے مالامال ہوجائیں۔ حضرت ربیع بنت معوز رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ ہم رمضان میں اپنے بچوں کو روزہ رکھواتے تھے اور ان کو مشغول رکھنے کے لئے کھلونے بنا کر دیتے تھے۔۔

تراویح کا اہتمام کرنا :- نماز تراویح اور اعتکاف کا بھی مکمل اہتمام کریں، بیس رکعات تراویح پر خیرالقرون سے لیکر آج تک امت مسلمہ کا تواتر کے ساتھ تعامل چلا آرہا ہے۔ سستی اور غفلت کی وجہ سے مثلا آٹھ یا دس رکعات پڑھ کر جان نہ چھڑائیں بلکہ مکمل بیس رکعات پڑھنے کا اہتمام کریں، اس طرح سستی کرنا بڑی محرومی کی بات ہے۔۔

یہ چند امور رمضان کے مہینہ کو قیمتی بنانے کے لۓ قابل توجہ ہیں، ان کے علاوہ بھی بہت سے امور ہیں جو آپ ائمہ مساجد اور علماء حضرات سے پوچھ پوچھ کر اپنا رمضان قیمتی بنا سکتے ہیں۔۔

اللہ تعالی اپنی رحمت سے ہم سب کو ان باتوں پر عمل كرنے اور اس رمضان المبارک کی قدر کرنے اور اس کے اوقات کو صحیح طور پر خرچ کرنے کے توفیق عطا فرمائے.


Notice: Trying to access array offset on value of type bool in /home/uzvggxsy/public_html/wp-content/themes/jannah/framework/classes/class-tielabs-filters.php on line 340

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close