اسلامیات

رمضان میں نفل نمازوں کا خصوصی اہتمام کیجئے

افادات: عارف باللہ حضرت مولانا محمد عرفان صاحب مظاہری دامت برکاتہم گڈا جھارکھنڈ
سلسلہ نمبر 5
یوں تو نفل نمازوں کی اپنی اہمیت و فضیلت ہے، رمضان ہو یا غیر رمضان ہو نفل نمازوں کا ہمیشہ اہتمام کرنا چاہیے. لیکن خاص رمضان میں نفل نمازوں کا اہتمام اور بڑھا دینا چاہیے. کیونکہ نماز سے اللہ کا قرب نصیب ہوتا ہے، نماز سے آنکھوں کو ٹھنڈک اور دل کو سرور حاصل ہوتا ہے اور نماز کے ذریعہ اللہ تعالیٰ سے ہمکلامی کا شرف حاصل ہوتا ہے. یہ ہمکلامی جتنی طویل ہو خوش نصیبی کا باعث ہے، اور خاص بات یہ ہے کہ اس مہینے میں نفل کا ثواب فرض کے برابر کر دیا جاتا ہے. اس لئے نفل نمازوں کا خصوصی اہتمام کرنا چاہیے تاکہ نامہء اعمال میں زیادہ نمازوں کا ثواب جمع ہو اور اللہ کا قرب حاصل ہو.

نفل نمازوں میں اشراق، چاشت اوابین اور تہجد کا اہتمام کرنا چاہیے، اسی طرح جو نفل نمازیں مقررہ اوقات میں معروف ہیں مثلاً ظہر مغرب اور عشاء کے بعد وغیرہ ان کو ضرور ادا کرنا چاہیے کیونکہ ان کے لئے مستقل طور پر اہتمام کرنے کی ضرورت نہیں. فرض اور سنت کے بعد ان کو ادا کیا جا سکتا ہے، ان کے علاوہ بھی خود سے دو چار دس بیس رکعت جتنی اللہ توفیق دے نفل کے طور پر پڑھنی چاہیے. بزرگان دین تو پچاس اور سو رکعتیں روزانہ پڑھا کرتے تھے.

سرکار دو عالم صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا *من قام رمضان ایمانا و احتسابا غفر لہ ما تقدم من ذنبہ (بخاری و مسلم)* جس نے قیام رمضان کیا اس کے پچھلے گناہ معاف کر دئیے جاتے ہیں. قیام رمضان سے مراد تراویح، نفل نماز، تلاوت، ذکر و اذکار اور دیگر عبادات میں رات کو مشغول رہنا ہے.

ان نفل نمازوں میں سب سے اہم تہجد کی نماز ہے، حضور اکرم صلی اللہ علیہ و سلم نے فرمایا *افضل الصلوۃ بعد الفریضۃ صلوۃ اللیل (مسلم، ابوداؤد، ابن ماجہ)* فرض نماز کے بعد سب سے افضل نماز تہجد کی نماز ہے، اور رمضان میں تہجد کی نماز پڑھنا نہایت آسان بھی ہے کیونکہ تہجد کی نماز کا وقت وہی ہے جو سحری کا وقت ہے، اس وقت عام طور پر سحری کے لئے لوگ بیدار ہوتے ہیں، اگر سحری کھانے سے پہلے یا سحری کھا کر تہجد کی نماز ادا کر لیں تو بلا مشقت کے بڑا ثواب حاصل ہوگا اور یہ بڑی سعادت کی بات ہوگی.

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: