غزل

سب کو گلے لگا نہ سکے اب کی عید میں

نتیجہ فکر افتخار حسین احسن.
رابطہ نمبر.6202288565
مسجد میں سر جھکا نہ سکے اب کی عید میں.
سب کو گلے لگا نہ سکے اب کی عید میں.

یوں بھوکے پیاسے رہ گیے بچے غریب کے.
ہاتھوں کو بھی دھلا نہ سکے اب کی عید میں.

بچے بلکتے رہ گیے کپڑوں کے واسطے.
کپڑے نیے دلانہ سکے اب کی عید میں.

اس سے قبل خلوص کی سجتی تھی محفلیں.
جام وفا پلا نہ سکے اب کی عید میں.

میرا وطن ہے لاک اسی واسطے میاں.
اپنوں کو بھی بلا نہ سکے اب کی عید میں.

جس کے حصول کے لیے مولی سے کی دعا.
ان کی جھلک بھی پا نہ سکے اب کی عید میں.

خنجر کا زخم آج بھی تازہ ہے اس لیے.
شکوے گلے بھلا نہ سکے اب کی عید میں.

احسن سناے کس کو یہاں داستان غم.
خوشیاں بھی تو منا نہ سکے اب کی عید میں.
……………………..

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

یہ بھی پڑھیں
Close
Back to top button
Close
%d bloggers like this: