اہم خبریں

شب برات میں کون کون سا کام کرنا چاہیے؟

مفتی محمد سفیان القاسمی
مدرسہ حسینیہ تجوید القرآن دگھی گڈا جھارکھنڈ 9955958633

سرکار دو عالم صلی اللہ علیہ و سلم کی سینکڑوں احادیث کی روشنی میں شب براءت فضیلت والی رات ہے، لہذا ایسی فضیلت والی رات جو سال میں ایک دفعہ آتی ہے ہمیں یہ چاہئے کہ اس رات کا ایک لمحہ بھی ضائع نہ ہونے دیں، چنانچہ اس رات کو کامیاب بنانے کے لئے بنیادی طور پر ہمیں دو کام کرنا چاہیے ایک یہ کہ اپنے لئے زیادہ سے زیادہ ثواب کا ذخیرہ جمع کریں اور دوسرے یہ کہ اپنے رشتہ داروں کو بھی ثواب پہنچائیں، اس کے لیے ہم کیا کیا کر سکتے ہیں اس کی کچھ تفصیل یہاں پیش کی جا رہی ہے

سب پہلے تو ہمیں یہ چاہئے کہ جو عمدہ کھانا شب براءت کو کھانے کے لیے تیار کرتے ہیں اس سے عصر سے پہلے ہی فارغ ہو جائیں اور مغرب سے پہلے تو ہر حال میں فارغ ہو جائیں اور مغرب کی نماز پورے خشوع و خضوع کے ساتھ پڑھیں پہلے فرض، پھر سنت پھر نفل، یہاں پر یہ یاد رہے کہ مغرب کی یہ نماز صرف شب براءت کے لئے نہیں بلکہ یہ عام دنوں کی طرح ہے. اسی طرح عشاء و فجر کی نماز بھی ادا کرنی ہے کیونکہ یہ سب نمازیں فرض ہیں اور فرض کو چھوڑ کر ہم دوسری نفلی عبادتوں میں مشغول ہوں گے تو نفلی عبادتوں کا ثواب یقیناً ملے گا لیکن فرض کو چھوڑنے کی وجہ سے گناہ بھی ہوگا اس لئے فرض نمازوں کا اہتمام بھی ضروری ہے. چنانچہ مغرب کی نماز سے فارغ ہو کر آپ اپنی سہولت کے اعتبار سے کئی قسم کی نفلی عبادات ہیں جو آپ کر سکتے ہیں مثلاً

*1 نفلی نماز* : آپ مغرب کی نماز کے بعد چھ رکعت اوابین کی نماز پڑھ سکتے ہیں، صلوۃ التوبہ اور صلوۃ التسبیح پڑھ سکتے ہیں، تہجد کے وقت میں تہجد پڑھ سکتے ہیں، ان نمازوں کے بڑے فضائل بیان کئے گئے ہیں

*2 تلاوت* : اس رات کو زیادہ سے زیادہ تلاوت کر سکتے ہیں، جن لوگوں کو قرآن کھول کر پڑھنے میں کوئی دشواری ہو تو وہ زبانی بھی پڑھ سکتے ہیں، جس کو صرف چند سورتیں یاد ہوں وہ انھیں سورتوں کو بار بار پڑھیں، سورہ فاتحہ یعنی الحمد للہ رب العالمین کو پچاس مرتبہ، سو مرتبہ پڑھیں، سورہ اخلا ص یعنی قل ھو اللہ احد کو تین سو مرتبہ چار سو مرتبہ پڑھیں، تین مرتبہ سورۃ اخلاص پڑھنے کا ثواب ایک قرآن پڑھنے کے برابر ہے. اسی طرح چاروں قل اپنے حساب سے چالیس پچاس مرتبہ پڑھیں ان کے علاوہ کوئی بھی سورۃ یاد ہو اسی کو بار بار پڑھیں، ہر ہر حرف پر ایک ایک نیکی ملتی ہے جو دس نیکیوں کے برابر ہوتی ہے. اس کے علاوہ ہر ہر سورہ کی الگ الگ فضیلتیں اور الگ الگ ثواب ہیں. اس لئے جتنی آیتیں ہوں جتنی سورتیں ہوں خواہ دیکھ کر یا زبانی، زیادہ سے زیادہ پڑھنے کی کوشش کریں،

*3 ذکر و اذکار* : شب براءت میں مختلف طرح کے اذکار میں سے جو آپ کو آسان لگے وہ کریں ، ہر ذکر کا ثواب الگ الگ ہوتا ہے ایک مرتبہ سبحان اللہ کہنے سے جنت میں ایک درخت لگتا ہے ایک مرتبہ الحمدللہ کہنے سے جنت میں ایک درخت لگتا ہے وغیرہ، لہذا کوئی بھی ذکر آپ اپنی سہولت کے اعتبار سے ایک ہزار دو ہزار دس ہزار مرتبہ کریں ، مثلاً سب سے آسان ذکر ہے لا الہ الا اللہ محمد رسول اللہ اسی کو پانچ سو ایک ہزار دس ہزار مرتبہ پڑھیں، تیسرا کلمہ سو دو سو پانچ سو مرتبہ پڑھیں، درود شریف پانچ سو ایک ہزار دس ہزار مرتبہ پڑھیں جو آپ سہولت کے ساتھ کر سکتے ہیں کریں ، کثرت سے استغفار کریں، سو دو سو ہزار دو ہزار مرتبہ استغفر اللہ ربی من کل ذنب و اتوب الیہ پڑھیں

*4 دعا* :اس رات آپ خوب دعا کریں، اللہ سے گڑگڑا کر مانگیں اپنی دنیا و آخرت کے لئے جو آپ کو سمجھ میں آئے خوب دعا کریں، اپنے رشتہ داروں کے لئے، تمام مسلمانوں کے لئے، پورے ملک اور پوری دنیا کے لئے دعا کریں، یہ دعا بھی کثرت سے پڑھ سکتے ہیں اللھم انک عفو کریم تحب العفو فاعف عنی

*5 ایصال ثواب* : آپ اس رات اپنے رشتہ داروں کو زیادہ سے زیادہ ثواب پہنچائیں، یہ کام آپ خود سے بھی کر سکتے ہیں آپ نے جو بھی نفلی عبادتیں کی ہیں، مثلاً نفلی نمازیں پڑھی ہیں ، قرآن کی کوئی سورہ پڑھی ہے، کوئی ذکر کیا ہے، کوئی تسبیح پڑھی ہے، یا کوئی صدقہ خیرات کیا ہے تو اپنے دل دل میں یہ کہ دیں اے اللہ اس کا ثواب ہمارے فلاں فلاں رشتہ دار کو پہنچا دے تو وہ ثواب اس کو ٹرانسفر ہو جائے گا، اور اگر باضابطہ دعا کے لیے ہاتھ اٹھائیں اور اللہ کی حمد و ثنا اور رسول پر درود پاک پڑھنے کے بعد مختلف دعائیں کریں اور ساتھ میں ان نفلی عبادتوں کا ثواب بھی کسی کو پہچانے کے بارے میں زبان سے کہ دیں تو یہ اور بہتر ہے مگر یہ بھی یاد رہے کہ جس کو آپ نے ثواب بھیجا ہے اس کو تو ثواب ملے گا ہی، آپ کے ثواب میں بھی کوئی کمی نہیں ہوگی،

*6 قبر کی زیارت* : شب براءت میں آپ قبرستان میں جائیں اور وہاں پہنچ کر اپنے رشتہ داروں کو، قبرستان کے تمام مردوں کو اور تمام گزرے ہوئے مسلمانوں کو ایصال ثواب کریں، ان کی مغفرت کے لئے دعا کریں،( مگر اس وقت اپنے ملک میں لاک ڈاؤن کے ساتھ دفعہ 144 نافذ ہے اور کرونا وائرس کی وبا پھیلی ہوئی ہے اس لیے قبرستان ہرگز نہ جائیں، عام شب براءت میں بھی قبرستان جانا فرض اور واجب نہیں بلکہ مباح ہے اور زیادہ سے زیادہ مستحب کہ سکتے ہیں. اس لئے اس مرتبہ قبرستان نہ جائیں تو بہتر رہے گا بلکہ موجودہ حالات کے پیش نظر قطعاً نہ جائیں.

یہاں پر اس بات کو اچھی طرح سمجھ لیں کہ شب براءت میں کوئی خاص عبادت مقرر نہیں ہے، آپ اپنی سہولت کے اعتبار سے جو عبادت کر سکتے ہیں کریں چنانچہ اوپر میں نفلی عبادتوں کی جتنی قسمیں لکھی گئی ہیں یہ سب شب براءت میں کرنا نہ فرض ہے اور نہ واجب، اور سنت بھی نہیں بلکہ مباح ہے اور زیادہ سے زیادہ مستحب کہ سکتے ہیں، اس لئے ان عبادتوں کو انجام دینے کے وقت ذہن میں ان باتوں کا رہنا ضروری ہے

مزید یہ بات ذہن نشیں رہنی چاہیے کہ پندرہویں شعبان کا روزہ یعنی شب براءت کے بعد آنے والے دن کا روزہ مسنون ہے اس لیے اس رات کے آخری حصے میں صبح صادق سے پہلے پہلے روزہ کی نیت سے سحری کھائیں اور دن بھر روزہ کر شام کو افطار کریں. یہ رسول اللہ کی سنت ہے

بہر حال ہماری یہ کوشش ہونی چاہیے کہ شب برات میں ہم زیادہ سے زیادہ ثواب کا ذخیرہ جمع کریں اور اپنے رشتہ دار و تمام مسلمانوں کو ایصال ثواب کریں، شب براءت کا کوئی لمحہ گناہ میں نہ گزرے اس کے لیے بھی ہمیں غور کرنا ہوگا کہ کون کون سا گناہ ہے جو ہم سے یا ہمارے بچوں سے ہو جاتا ہے اس سے کیسے پرہیز کریں، مثلاً پٹاخہ چھوڑنا غیر اسلامی شعار اور فضول خرچی ہے اس لیے اس گناہ سے خود رکنا اور دوسروں کو بھی روکنا ضروری ہے، اسی طرح چراغاں کرنا یعنی گھر اور راستوں میں زیادہ سے زیادہ قمقمے لگانا، موم بتی اور دیا جلانا یہ سب فضول خرچی اور غلط رسم ہے اس کا کوئی ثواب نہیں بلکہ اس سے گناہ ہوگا، آپ ایسا کرسکتے ہیں کہ پٹاخہ، دیا اور قمقموں کے پیسے غریبوں کو صدقہ کر دیں تو آپ کو ڈبل ثواب ملے گا ایک تو صدقہ کرنے کا اور ایک غلط رسم کو چھوڑنے کا، اللہ تعالیٰ ہمیں اور آپ کو شب براءت میں زیادہ سے زیادہ نیک اعمال کی توفیق مرحمت فرمائے اور فضول و لایعنی کاموں سے بچائے آمین

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: