غزل

طرحی غزل

*طرحی غزل*
ازقلم افتخار حسین احسن.
رابطہ.6202288565.
ہے ضد پر ابھی بھی ستمگر اکیلے.

نکلتا نہیں اب کبوتر اکیلے.

مجھے اپنی بانہوں کے حلقے میں لے لے.
*گزرتا نہیں اک دسمبر اکیلے*

ذرا آکے پی لو شراب محبت.
شب وروز رہتا ہوں گھر پر اکیلے.

مجھے زخم اپنوں نے اتنا دیا ہے.
ابھی بھی میں روتا ہوں اکثر اکیلے.

تمہیں اپنی دلہن بناکر رہونگا.
اٹھانا پڑے چاہے خنجر اکیلے.

تری یاد ہردم ستاتی ہے مجھکو.
میں کیسے رہوں بولو پل بھر اکیلے.

گئ جب سے ناراض ہوکر وہ میکے.
میں اکثر لگاتا ہوں بستر اکیلے.

سدا خوف احسن پہ رہتا ہے طاری.
وہ جب بھی نکلتا ہے اکثر اکیلے.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: