زبان و ادب

غزل

پریم ناتھ بسملؔ رابطہ۔8340505230

ختم ظالم تری کہانی ہے
پھر بھی لب پر غلط بیانی ہے
کیوں اکڑتا ہے اپنی قسمت پر
یہ حکومت تو آنی جانی ہے
کون رہتا ہے اس جہاں میں سدا
زندگی بھی تمہاری فانی ہے
ڈوب جائے گی تیری بھی کشتی
ہم نے دیکھی عجب روانی ہے
حادثے ہو رہے نئے ہیں مگر
چال اس نے چلی پرانی ہے
ہار کر یوں نہ بیٹھیے ہمّت
اب بھی باقی بہت جوانی ہے
ڈھونڈنی ہے نئی دوا دل کی
آج بسملؔ نے دل میں ٹھانی ہے

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: