اہم خبریں

مسلم پرسنل لاء پر اکابرین امت کا مشترک بیان

مسلم پرسنل لاجس کی اساس شریعت اپلیکیشن ایکٹ ۱۹۳۷ء ہے، اس سے ہمارے ملک میں مسلمانوں کی مذہبی شناخت متعلق ہے، ان میں سے بیشتر احکام قرآن مجید کی صریح آیات اور معتبر احادیث سے ثابت ہیں، اسی لیے ان پر امت کا اجماع و اتفاق ہے۔ اس لیے ملت اسلامیہ ہند کا حکومت ہند سے متفقہ مطالبہ ہے کہ وہ مسلم پرسنل لا کو متأثر کرنے والا قانون یونیفارم سول کوڈ لانے کا ارادہ ترک کر دے اور دستور کے بنیادی حقوق کے تحت ملک کے تمام لوگوں کو اپنے مذہب پر عمل کرنے کی جو آزادی دی گئی ہے، اس کا احترام کرے۔ مسلمانوں سے اپیل کی جاتی ہے کہ بائیسویں لا کمیشن آف انڈیا نے یونیفارم سول کوڈ کے سلسلہ میں ملک کے شہریوں سے جو رائے طلب کی ہے اس کا ضرور جواب دیں۔ اپنے جواب میں یہ واضح کریں کہ ہمیں یونیفارم سول کوڈ قطعاً قبول نہیں ہے۔ کوشش کریں کہ ۱۴؍ جولائی سے پہلے ہر تنظیم اپنی تنظیم کی طرف سے اور ہر شخص اپنی انفرادی حیثیت سے لا کمیشن تک ای میل یاکسی اور ذریعہ سے اپنا جواب پہنچادے۔
مولانا خالد سیف اللہ رحمانی
صدر آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ
مولانا کاکا سعید احمد عمری
نائب صدر آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ
مولانا سید ارشد مدنی
نائب صدر بورڈ(صدر جمعیۃ علماءہند)
پروفیسر ڈاکٹر سیدعلی محمد نقوی
نائب صدر بورڈ (فرقہ اثنا عشریہ )
مولانا ڈاکٹر سید شاہ خسرو حسینی
نائب صدر آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ
جناب سید سعادت اللہ حسینی
نائب صدر بورڈ (امیر جماعت اسلامی ہند )
مولانا محمد فضل الرحیم مجددی
جنرل سکریٹری آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ
مولانا سید محمود اسعد مدنی
صدر جمعیۃ علماء ہند
مولانا مفتی ابوالقاسم نعمانی
مہتم دار العلوم دیوبند
مولانا اصغر علی بن امام مہدی سلفی
امیر جمعیت اہل حدیث
مولانا سید مسعود حسین مجتہدی
فرقہ مہدویہ
مولانا سید احمد ولی فیصل رحمانی
امیر شریعت بہار، اڑیسہ و جھار کھنڈ
مولانا صغیر احمد رشادی
امیر شریعت کرناٹک
مولانا محمد یوسف علی
امیر شریعت آسام و مشرقی ہند
جناب ضیاء الدین نیر
صدر کل ہند مجلس تعمیر ملت ، حیدر آباد
پروفیسر علی کٹی مصلیار
جامعة الثقافة السنیہ
مولاناحکیم محمد عبد اللہ مغیثی
صدر آل انڈیا ملی کونسل
مولاناسید بلال عبدالحی حسنی ندوی
ناظم ندوة العلماء لکھنؤ
مولانا محمد سفیان قاسمی
مہتمم دار العلوم وقف، دیوبند
مولانا سید محمد شاہد الحسنی مظاہری
ناظم جامعہ مظاہر علوم سہارنپور
مولا نا مفتی احمد خانپوری
گجرات

جاری کردہ

ڈاکٹر سید قاسم رسول الیاس
ترجمان بورڈ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
Joint Statement of Muslims Religious Leaders

The religious identity of Indian Muslims is deeply linked with Muslim Personal Law, which is founded upon the Shariat Application Act of 1937. Numerous laws based on Sharia principles are directly derived from clear verses of the Holy Quran and reliable hadiths, and as a result, there exists a consensus among the Ummah regarding their authority.
Hence, we firmly demand that the Government of India completely abandon its plans to introduce the Uniform Civil Code. This code, if implemented, would undeniably impact Muslim Personal Law, jeopardizing the fundamental right of our country’s citizens to freely practice their religions—a right safeguarded by the Constitution. We earnestly request Muslim citizens to actively respond to the 22nd Law Commission of India, which has sought public opinion on the matter of the Uniform Civil Code.
In your responses, please make it explicit that we firmly reject the Uniform Civil Code. Kindly note that opinions must be submitted to the Law Commission before July 14th, 2023. We urge every organization and individual, in their respective capacities, to submit their responses to the Law Commission via email or any other suitable means of communication.
Ml. Khalid Saifullah Rahmani
President All India Muslim Personal Law Board
Ml. Kaka Sayeed Ahmed Oomeri
Vice- President All India Muslim Personal Law Board
Ml. Syed Arshad Madani
Vice- President AIMPLB (President Jamiat-Ulama-i-Hind)
Dr. Syed Ali Mohammad Naqvi
Vice- President AIMPLB (Firqa Isna Asharia)
Ml. Dr. Syed Shah Khusroo Husaini
Vice- President All India Muslim Personal Law Board
Mr. Syed Sadatullah Husaini
Vice- President AIMPLB (Ameer Jamat E Islami Hind)
Ml. Mohd. Fazlur Raheem Mujaddedi
General Secretary All India Muslim Personal Law Board
Ml. Syed Mahmood Madani
President Jamiat-Ulama-i-Hind
Ml. Mufti Abul Qasim Nomani
Mohtamim Darul Uloom Deoband
Ml. Asghar Ali Bin Imam Mehdi Salafi
Ameer Markazi Jamiat Ahle Hadith Hind
Ml. Masood Husain Mujtahedi
Firqa Mahdavia
Ml. S. Ahmad Wali Faisal Rahmani
Ameer-e-Shariat Bihar, Odisha & Jharkhand
Ml. Sagheer Ahmed Rashadi
Ameer-e-Shariat Karnataka
Ml. Md. Yoosuf Ali
Ameer-e Shariat Assam & North East India
Mr. Md. Zia Uddin Nayyar
President All India Majlis-e-Tameer-e-Millat
Prof. Ali Kutti Musliar
Markazu Saqafathi Sunniyya
Ml. Hakeem Md. Abdullah Mughisi
President All India Milli Council
Ml. S. Bilal Abdul Hai Hasani Nadvi
Nazim Nadwatul Ulama
Ml. Md. Sufyan Qasmi
Mohtamim, Darul Uloom (Waqf) Deobnad
Ml. Syed Mohd. Shahid Hasani Mazahiri
Ameen-e-Aam Jamia Mazahirul Uloom
Mufti Ahmad Khanpuri
Gujarat

Issued by

Dr. S. Q. R. Ilyas
Spokesperson


ALL INDIA MUSLIM PERSONAL LAW BOARD
76 A/1, Main Market, Okhla Village, Jamia Nagar

New Delhi – 110025 (India)

Mob.: +91-9910519871

Ph: +91-11-26322991, 26314784

E-mail: aimplboard@gmail.com

Website: www.aimplboard.in

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close