اہم خبریں

مفتی اعجاز ارشد قاسمی کی رحلت : ملت اسلامیہ نے ایک قابل نوجوان کو کھو دیا: مفتی سفیان ظفر قاسمی

گڈا جھارکھنڈ

مفتی اعجاز ارشد قاسمی کے انتقال سے ایک حلقہ میں انتہائی صدمہ اور سوگ کا ماحول ہے، پچھلے ایک سال سے کورونا کی وجہ سے جہاں اکابرین کے جانے کا سلسلہ لگا تار جاری ہے، یہ وہم و گمان میں بھی نہیں تھا کہ نوجوان بھی اس کی چپیٹ میں آ سکتے ہیں، مگر مفتی اعجاز ارشد قاسمی کے انتقال سے یہ بھرم بھی ٹوٹ گیا اور اب یوں لگتا ہے کہ کہ کرونا کس کو لقمہ ء اجل بنا لے کچھ نہیں کہا جا سکتا

اس موقع پر مفتی سفیان ظفر قاسمی صدر جمعیۃ علماء بلاک بسنت راءے گڈا جھارکھنڈ نے اپنے تعزیتی بیان میں کہا کہ مفتی اعجاز ارشد قاسمی ایک با ہمت، صاحب علم، صاحب قلم اور بے باک نوجوان تھے جو ملت کی اچھی ترجمانی کا فریضہ انجام دے رہے تھے، وہ مسلم پرسنل لا بورڈ کے متحرک و فعال ممبر تھے، اور مسلم مسائل پر بے خوف بولتے تھے، دار العلوم دیوبند میں بھی انھوں نے میڈیا کے شعبہ میں کام کیا ہے، ان کے مضامین اخبار کی زینت بنتے تھے اور ان کی کتاب،، من شاہ جہانم،، تو گویا صحافت کے طالب علم کے لئے ایک مکمل گائیڈ بک کی حیثیت رکھتی ہے.

مفتی سفیان ظفر قاسمی نے کہا کہ دار العلوم دیوبند کے زمانہ ء طالب علمی سے ان سے عقیدت تھی اور ان سے بارہا استفادہ کا موقع ملا، بڑے اچھے اخلاق کے حامل اور بلند حوصلہ کے مالک تھے، اللہ تعالیٰ ان کے درجات بلند فرمائے اور ان کے پسماندگان کو صبر جمیل عطا فرمائے آمین

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

یہ بھی پڑھیں
Close
Back to top button
Close
%d bloggers like this: