غزل

ناحق کبھی کسی کی شکایت نہ کیجیے

از قلم افتخار حسین احسن
رابطہ نمبر 6202288565

ناحق کبھی کسی کی شکایت نہ کیجیے.

اپنوں کے بیچ رہ کے حماقت نہ کیجیے.

ہم تو بڑوں کا فرض نبھاتے ہی رہ گیے.

زخم جگر ہے تازہ وضاحت نہ کیجیے.

اک لاعلاج مرض سے سونی ہے مسجدیں.
کس نے کہا ہے گھر میں عبادت نہ کیجیے.

جو خود ذلیل وخوار ہے اپنے سماج میں.

ان جیسے رذیلوں کی حمایت نہ کیجیے.

ہے قبر بھی قریب قیامت قریب ہے.

اب بھی سنبھلیے اور شرارت نہ کیجیے.

ہوتا رہے گا کب تلک انساں کا قتل عام.

مذہب کے نام گندی سیاست نہ کیجیے.

مسجد سے کب نکال دے کوئ پتہ نہیں.

سچ ہی کہا تھا اس نے امامت نہ کیجیے.

جس سے تیرا وجود بھی ہوجاے داغدار.

احسن بیان ایسی حکایت نہ کیجیے.
…………………….

Related Articles

One Comment

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: