اہم خبریں

نازک ہیں حالات، نہ جانے کیا ہوگا

غزل ازقلم: افتخار حسین احسن.
رابطہ نمبر.6202288565

بے موسم برسات نہ جانے کیا ہوگا.

نازک ہیں حالات نہ جانے کیا ہوگا.

ملنا چلنا چھوڑ کےصابن پانی سے.
دھوتے ہیں ہم ہاتھ نہ جانے کیاہوگا.

گلی گلی اور شہر شہر ہے سناٹا.
ہیں سرپر آفات نہ جانے کیا ہوگا.

ڈر ہے کرونا کا طاری ہرچہرے پر.
ایسے ہیں لمحات نہ جانے کیا ہوگا.

پڑنے لگے ہیں کھانے پینے کے لالے.
خشک ہوے باغات نہ جانے کیا ہوگا.

مردوزن اور چھوٹے بڑے ہیں سب احسن.
صدمے میں دن رات نہ جانے کیا ہوگا.
…………….

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: