مضامین

وہ جن سے روشن تھی فضائیں وطن کی دیے رفتہ رفتہ بجھے جا رہےہیں

عبدالہادی روورلیڈر جمعیت یوتھ کلب سہارنپور

جمعیۃ علماء اترپردیش کے فعال و متحرک صدر جناب حضرت مولانا متین الحق اسامہ قاسمی فتح پوری ثم کانپوری رحمت اللہ علیہ آج رات تقریبا دو بجے دار فانی سے دارالبقاء کی طرف رحلت فرما کر اپنے مالک حقیقی سے جا ملے
انا لله وانا اليه راجعون
حضرت مرحوم کی وفات امت مسلمہ خاص طور پر جمیعت علماء کے لیے عظیم خسارہ ہے
موصوف نہایت عمدہ اوصاف کے حامل تھے
بہت مشفق خلیق و کریم تھے ملک و ملت کی خدمت کیلئے ھمہ وقت مصروف رھتے تھے
موصوف جمعیۃ علماء اترپردیش کے صدر
جامعہ محمودیہ اشرف العلوم جامع مسجد اشرف آباد جاجمؤ کانپور کے ناظم اعلیٰ
اور قاضی شہرکانپور
صدر رابطہ مدارس اسلامیہ دارالعلوم دیوبند مشرقی یوپی
اور کل ھند مجلسِ تحفظ ختم نبوت کی کانپور شاخ کے صدر جیسے عہدوں پر فائز تھے اور نہایت اخلاص اور جفاکشی کے ساتھ بے لوث خدمات انجام دیں
مایہ ناز خطیب اور بے مثال مقررین میں آپ کا شمار ھوتا تھا
ختم نبوت کا اثبات جیسے موضوعات پر آپ کو خاص مقام حاصل تھا
ختم نبوت کے اجلاسوں میں آپ کا نام خاص طور پر سر فہرست ھو تا تھا
حضرت کاہم سے رخصت ہو جانا حالات کی نزاکت کے باعث از حد صدمہ کا باعث بنا میں اپنی جانب اور تمام دوست و احباب کی جانب سے
حضرت مولانا امین عبداللہ صاحب کانپوری کی خدمت میں تعزیت مسنونہ پیش کرتا ھوں
باری تعالی پسماندگان کو خصوصا اور امت مسلمہ کوعموماًصبر جمیل عطا فرمائے جمعیت علماء ہند کو حضرت کا نعم البدل عطا فرمائےاور حضرت مرحوم کی بال بال مغفرت فرمائے قبر کو نور سے منور فرمائے اور مقربین بارگاہ میں شامل فرمائے
آمین یا رب العالمین
اللهم اغفر له وارحمه ونقه من الخطايا والذنوب كما نقيت الثوب الأبيض من الدنس وأدخله الفردوس الأعلى من الجنة وأسبغ على أهله وذويه الصبر والسلوان يا أرحم الراحمين

موت اس کی ہےجس پر زمانہ کرے افسوس
یوں تو دنیا میں سبھی آئے ہیں مرنے کیلئے

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: