مضامین

پیغام حضرت مولانا محمد سالم صاحب جامعی ، ایڈیٹر ہفت روزہ الجمعیۃ نئی دہلی

بسم اللہ الرحمان الرحیم
یہ معلوم ہوکر بے حد مسرت ہوئی کہ’’ جہازی میڈیا ‘‘ (ڈیجیٹل) معروف ملی و سیاسی رہنما حضرت مولانا محمد اسرارالحق قاسمی ؒ کی حیات و خدمات کے عنوان پر ایک خصوصی مجموعہ مضامین شائع کر رہا ہے ۔
مولانا قاسمی مرحوم کی شخصیت کسی تعارف کی محتاج نہیں ہے ، وہ اپنی قومی و ملی خدمات، پر عزم جدوجہد، علم و عمل کی پختگی اور سیاسی سوجھ بوجھ کی حیثیت سے ایک ممتاز مقام کے حامل تھے۔ انھوں نے دارالعلوم دیوبند سے فراغت کے بعد ، مدرسہ بدر الاسلام بیگوسرائے بہارسے تدریسی سلسلہ شروع کیا، جس کے بعد ملک کی موقرو فعال تنظیم جمعیۃ علماء ہند کے ساتھ بحیثیت سکریٹری اور پھر مولانا سید احمد ہاشمی ؒ کے بعدبحیثیت ناظم عمومی جمعیۃ علماء ہند سے وابستہ ہوگئے ، جس کے بینر تلے امیر الہند حضرت مولانا سید اسعد مدنی ؒ کی سیادت و قیادت میں عظیم الشان قومی و ملی سرگرمیاں انجام دیں۔ پہلے ۲۰۰۹ء کے پارلیمانی انتخابات میں انھوں نے کشن گنج کے حلقہ سے کانگریس کے ٹکٹ پر انتخاب لڑا اور کامیاب ہوکر حلقہ کی نمائندگی کی ۔ اور پھر ۲۰۱۴ء میں بی جے پی کی لہر کے باوجود اسی حلقہ سے کامیاب ہوکر تا دم واپسیں (۲۰۱۸) پارلیمنٹ میں حلقہ کی نمائندگی کا فریضہ انجام دیتے رہے۔
مولانا مرحوم مزاج کے لحاظ سے سیکولر مزاج اور جمہوریت پسند تھے ۔ ملک کے تمام فرقوں کے درمیان ہم آہنگی کے لیے ان کی جدوجہد زندگی کا ایک روشن باب ہے ، وہ سادگی، صبرو تحمل، وضع داری اور ذہنی و فکری استقامت میں اسلام کا نمونہ تھے ۔ وہ ایک اچھے قائد کے ساتھ ساتھ ایک خوب صورت قلم کار بھی تھے ۔ ان کی تحریریں سنجیدگی کا ایک اعلیٰ نمونہ ہوتی تھیں۔
مولانا قاسمی ؒ کا خاص موضوع تعلیم تھا، اس کے لیے انھوں نے آل انڈیا ملی و تعلیمی فاونڈیشن کی بنیاد ڈالی، جس کے تحت انھوں نے اپنے وطن مالوف کشن گنج بہار کے علاوہ ملک کے مختلف علاقوں میں لڑکوں اور لڑکیوں کے لیے دینی و عصری تعلیمی ادارے قائم کیے، جو بحمد اللہ اعلیٰ پیمانے پر اپنا فریضہ انجام دے رہے ہیں۔
ہفت روزہ الجمعیۃ سے شروع سے ہی ان کا گہرا تعلق رہا ، ایک عرصہ تک وہ اس کے ایڈیٹر رہے ، کچھ عرصہ بعد ان کی اپنی مصروفیات کی وجہ سے ادارت کا سلسلہ تو باقی نہیں رہ سکا، تاہم کالم نگار کی حیثیت سے الجمعیۃ سے ان کا تعلق برابر جاری رہا۔ میزان کا کالم اکثر وہی لکھتے تھے جسے الجمعیۃ کے قارئین بڑی دل چسپی سے پڑھتے تھے ۔ اللہ تعالیٰ ’’جہازی میڈیا‘‘ کی اس کوشش کو شرف قبولیت سے نوازے اور مولانا مرحوم کو اپنا قرب خاص عطا فرمائے ۔ آمین۔

(مولانا ) محمد سالم جامعی (صاحب)
ایڈیٹر ہفت روزہ الجمعیۃ دہل

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close