اہم خبریں

ہندی اردو ساہتیہ ایوارڈ کمیٹی کی 28ویں سہ روزہ بین الاقوامی ادبی تقریبات21مارچ سے

سامنے آئیں گے فراق گورکھپوری کی شاعری کے دلچسپ پہلو،اسمبلی کے اسپیکر کریں گے شخصیات کا اعزاز

لکھنو:15مارچ،بہت پہلے سے ان قدموں کی آہٹ جان لیتے ہیں،تجھے اے زندگی ہم دور سے پہچان لیتے ہیں۔جیسے اشعارکے خالق رگھوپتی سہائے فراق گورکھپوری پرمرکوزہندی اردو ساہتیہ ایوارڈ کمیٹی کی اٹھائیسویں سہ روزہ ادبی تقریبات21سے23مارچ کومنعقد کی جائیں گی۔افتتاحی اجلاس 21مارچ کو کلامنڈپ آڈیٹوریم قیصرباغ میں اورادبی مباحثہ ومذاکرہ22و23مارچ کوقیصرباغ کے ہی رائے اوماناتھ بلی آڈیٹوریم میں چلیں گے۔
ایوارڈ کمیٹی کے جنرل سیکریٹری اطہرنبی نے بتایا کہ کمیٹی اس سے پہلے سابق صدر جمہوریہ عبدالکلام،کنور بیچین،گوپی چند نارنگ،اشوک چکردھر،مجروح سلطانپوری،ہری ونش رائے بچن، علی سردار جعفری، جیسی عظیم شخصیات پر27 بین الاقوامی سطح کے پروگرام منعقد کراچکی ہے۔ان تقریبات میں امریکہ، کناڈا،یوکے،مصر،افغانستان،پاکستان،قزاکستان،ترکی،وغیرہ کے مختلف ممالک کے دانشوران نے شرکت کی ہے۔ساتھ ہی کمیٹی کی جانب سے قلمکاروں،ادیبوں اوران کی شخصیات پرمبنی ان انعقاد پر کتابوں کی اشاعت بھی کی گئی ہے۔انہوں نے بتایا کہ معروف شاعر فراق گورکھپوری کی حیات وخدمات پرمرکوزگنگا- جمنی تہذیب کے شہر میں منعقد ہورہی اس تقریب میں 21مارچ کوشام 6بجے مہمان خصوصی کے طور پراسمبلی کے اسپیکرہردئے نارائن دکشت ہندی اور اردو ادب کے میدانوں میں اہم خدمات انجام دینے والی شخصیات کو’ساہتیہ شرومنی‘ ایوارڈ سے سابق گورنررام نائیک،کو’بیگم اخترایوارڈ‘ سے،انو پ جلوٹا،’نشان فراق‘ایوارڈ سے سرفراز کئے جائیں گے۔بقیہ دیگر ایوارڈزکیلئے19مارچ کو ہونے والی میٹنگ میں فیصلہ لیا جائے گا۔ اس موقع پر کلامنڈپ میں فراق گورکھپوری کے نام پر منعقد ثقافتی شام میں انوپ جلوٹا اور متھلیش لکھنوی فراق کی غزلیں ونظمیں دیگرفنکاروں کے ساتھ پیش کریں گے۔ساتھ ہی ممبئی اور کلکتہ کے کلاکاروں اور فنکاروں کی پُرکشش پیشکش افتتاحی تقریبات کی جان ہوں گی۔رائے اوماناتھ بلی آڈیٹوریم قیصرباغ میں 22اور23مارچ کوفراق گورکھپوری کی حیات وخدمات پر ہونے والے سیمینار کے سیشن میں پروفیسرشارب رودولوی،پروفیسرانیس اشفاق، ڈاکٹرانیس انصاری،پروفیسرقاضی عبیدالرحمان ہاشمی،پروفیسرشافع قدوائی،پروفیسرارتضیٰ کریم،پروفیسرصابرہ حبیب،ڈاکٹراحتشام احمد خاں، ڈاکٹرعباس رضانیر،ڈاکٹرسیماصدیقی،پروفیسرعارف ایوبی،پروفیسرشفیق اشرفی،پروفیسراوشاسنہا،سہیل کاکوروی،ضیاء اللہ صدیقی،ڈاکٹرمسیح الدین خان،اوررفیع احمدسمیت ملک وبیرون ملک کے20سے زائد دانشوروادیب اپنانظریہ پیش کریں گے۔یہ اطلاع میڈیاانچار ج ضیاء اللہ صدیقی نے دی ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

یہ بھی پڑھیں
Close
Back to top button
Close
%d bloggers like this: