غزل

یہ رنگ بو بہار، تمھارے لیے تو ہے

محمد کاظم شیرازی
9616689442

یہ رنگ بو بہار۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تمہارے لئے تو ہے
ماحول ساز گار۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔تمہارے لئے تو ہے

ہم کو کہاں نصیب۔۔۔۔۔۔۔۔ چین زندگی میں
یہ سکوں یہ قرار۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تمہارے لئے تو ہے

میرے جہان شوق کو تم پوچھتے ہوکیا
قربان بار بار۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تمہارے لئے تو ہے

میں موسم خزاں۔۔۔۔۔۔۔۔ کے مانند ہوں مگر
یہ موسم ِ خوشگوار۔۔۔۔۔۔۔ تمہارے لئے تو ہے

مجھکو تو ایک بوند ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ میسر نہیں ہوئی
یہ جام یہ خمار ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تمہارے لئے تو ہے

کھولیں ہیں تیرے واسطے سب دل کی کھڑکیاں
آجاٶ یہ دیار۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تمہارے لٸے تو ہے

تم اپنے دل سے ۔۔۔۔۔ خود ہی مرا حال پوچھ لو
یہ بندہ بےقرار۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔تمہارے لئے تو ہے

مدفون جس میں ہو گٸیں کاظم کی دھڑکنیں
دل کا وہ اک مزار۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تمھارے لٸے تو ہے

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

یہ بھی پڑھیں
Close
Back to top button
Close
%d bloggers like this: