اہم خبریں

مولانا آزاد ایک مثالی قائد اور ہندو مسلم اتحاد کے علمبردار تھے

مولانا آزاد ایک مثالی قائد اور ہندو مسلم اتحاد کے علمبردار تھے۔

مولانا علاء الدین ایجوکیشنل سوسائٹی کے زیر اہتمام منعقد سمینار سے علماء و دانشوران کا اظہار خیال
(گڈا نامہ نگار ) ۱۱/ نومبرمولانا ابو الکلام آزاد رح کی یوم ولادت کو یوم تعلیم کے نام سے منایا جاتا ہے ، اس مناسبت سرزمینِ دگھی میں مولانا علاء الدین ایجوکیشنل سوسائٹی جھارکھنڈ کے تحت ایک علمی مجلس اور فکری سمینار کا انعقاد کیا گیا، جس میں تیس سے زیادہ اسکالرس اور مقالہ نگار شریک ہوئے ۔ ہر ایک نے مولانا آزاد رح کی زندگی کے الگ الگ گوشوں پر روشنی ڈالی، اس موقع پر بڑی تعداد میں اہل علم اور سیاسی لوگ بھی موجود تھے، پروگرام کی صدارت ماسٹر مسلم صاحب نے کی، اور مہمان خصوصی کے طور پر ماسٹر سلطان محی الدین صاحب، صادق احمد ایڈوکیٹ صاحب،جناب افسر حسنین صاحب مولانا ریاض الدین صاحب، اسلم آزاد صاحب، مولانا الیاس ثمر قاسمی اور مفتی سفیان ظفر قاسمی وغیرہ نے شرکت کی۔ مولانا محمد قمر الزماں ندوی نے مولانا آزاد کو ایک مثالی اور عبقری شخصیت قرار دیا اور کہا کہ مولانا آزاد جیسا مضبوط اور قابل سیاست داں ہندوستان میں کم ہوئے۔ گاندھی جی اور پنڈت نہرو بھی ان کی قابلیت کے معترف تھے۔
اس موقع پر سوسائٹی کے صدر حافظ حامد الغازی صاحب نے مولانا آزاد کی زندگی کے الگ الگ پہلوؤں پر اظہار خیال کیا، انہوں نے کہا کہ وہ جمہوریت اور سیکولرازم کے سب سے بڑے داعی تھے، اور ملک کو سیکولر دیکھنا چاہتے تھے،وہ ملک کی تقسیم کے سخت مخالف تھے، انہوں مسلم لیگ کے نظریہ کی سخت مخالفت کی،جناب صادق احمد ایڈوکیٹ نے مولانا آزاد کی سیاسی اور تعلیمی زندگی پر تفصیل سے اپنی بات رکھی، اور بتایا کہ وہ ایک انقلابی انسان تھے،صدیوں میں ایسے لوگ پیدا ہوتے ہیں۔ ماسٹر شمس نیر اور ماسٹر گلاب نے بھی ہندی اور انگریزی میں تقریر کی۔
مولانا شمس پرویز مظاہری نے جلسہ کے مقصد اور غرض و غایت کو بیان کیا اور مولانا علاء الدین ایجوکیشنل سوسائٹی کی خدمات کا تعارف کرایا،
مولانا محمد قمر الزماں ندوی اور مولانا شمس پرویز مظاہری نے پروگرام کی نظامت کی۔اس موقع پر علاقہ اور ضلع گڈا اور اطراف کے کافی لوگ شریک ہوئے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close