اہم خبریں

11 جنوری کو ہوگا مہگاواں گڈا میں سی اے اے اور این آر سی کے خلاف زبردست مظاہرہ ،تیاریاں زوروں پر، تمام لوگوں سے شرکت کی اپیل

مہگاواں، گڈا / رپورٹ محمد سفیان القاسمی،ایڈیٹر جہازی میڈیا جھارکھنڈ

سی اے اے، این آر سی اور این پی آر صرف مسلمانوں کے خلاف نہیں بلکہ ہندو سکھ عیسائی اور یہاں کے تمام باشندوں کے خلاف ہے، ملک کے آئین کے خلاف ہے، یہ ہندو مسلم اتحاد، اور گنگا جمنی تہذیب کو پارہ پارہ کرنے کی سازش ہے، ایسے قوانین سے کوئی ایک طبقہ پریشان نہیں ہوگا بلکہ اس سے یہاں کے تمام طبقات طرح طرح کے مسائل اور پریشانیوں کے شکار ہوں گے

یہی وجہ ہے کہ اس وقت پورے ملک میں ان قوانین کے خلاف پر زور احتجاج ہو رہا ہے اور اس احتجاج میں تمام مذاہب اور تمام طبقات کے لوگ شانہ بشانہ شامل ہیں، اور چونکہ پہلے جھارکھنڈ میں الیکشن کی وجہ سے ضابطہ اخلاق نافذ تھا جس کی بنا پر کسی طرح کا احتجاج ممنوع تھا مگر اب الیکشن ختم ہونے کے بعد جھارکھنڈ میں بھی احتجاج کا سلسلہ شروع ہوچکا ہے چنانچہ گڈا ضلع میں بھی احتجاج کی تیاریاں چل رہی ہیں اور ضلع گڈا کے تحت واقع بسنت راءے، مہگاواں اور مہرما و ٹھاکر گنگٹی میں بھی تیاریاں جاری ہیں

مہگاواں میں 11 جنوری کو زبردست احتجاجی مظاہرہ ہوگا جس میں ہندو مسلم اور تمام مذاہب و تمام طبقات کے لوگ شامل رہیں گے، اس کو پرامن بنانے کے لیے اور کسی کو دشواری پیش نہ آئے نیز اس کو تاریخ ساز بنانے کے لئے مورخہ 6 جنوری کو نیا نگر میں ہندو مسلم اور تمام مذاہب اور تمام طبقات کے لوگوں کی ایک میٹنگ ہوئی، اس میٹنگ میں تقریباً تین سو لوگوں نے شرکت کی اور انتظامات سے متعلق ضروری باتیں ہوئیں اور تمام لوگوں نے عزم کیا کہ اس مظاہرہ کو کامیاب بنانے کے لئے ہر ممکن جد و جہد کریں گے، میٹنگ میں علماء کرام، دانشوران، اور سیاسی لیڈران شریک تھے، واضح رہے کہ طے شدہ پروگرام کے مطابق لوگ 11:30بجے تک موہارہ میدان میں حاضر ہو جائیں گے پھر وہاں سے لال میدان کی طرف جلوس نکلے گا. اس کی اطلاع مفتی محمد اقبال صاحب قاسمی نے جہازی میڈیا کو دی نیز انھوں نے بتایا کہ اراکین دستور بچاؤ دیش بچاؤ کمیٹی نے گزارش کی ہے کہ اس دن مہگاواں، مہرما اور ٹھاکر گنگٹی کے تمام لوگ بلا لحاظ مذہب و مسلک لازمی طور پر اس احتجاج میں شامل ہوں اور حکومت کو یہ قوانین واپس لینے پر مجبور کر دیں

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
%d bloggers like this: